***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > تلاش کریں

Share |
سرخی : f 1292    کعبۃ اللہ شریف کے دیدار کے وقت دعا کی قبولیت
مقام : حیدرآباد ۔انڈیا,
نام : محمد وحید الدین
سوال:    

عام طور پر حج کے دنوں میں تربیتی کیمپ حج سیمینار میں اور عام حاجیوں کے زبان سے یہ بات سننے میں آتی ہے کہ کعبۃ اللہ شریف کو دیکھتے وقت جو دعاء کی جاتی ہے وہ قبول ہوتی ہے‘ لیکن ایک صاحب نے اس بارے میں کہا کہ اس موقع پر دعا کی قبولیت حدیث شریف سے ثابت نہیں ہے‘ کیا یہ صحیح ہے اور یہ کس حدیث میں آیا ہے یا ایسے ہی لوگوں میں سنی سنائی مشہور بات ہے ؟ برائے مہربانی حوالوں کے ساتھ تشفی بخش جواب عنایت فرمائیں۔


............................................................................
جواب:    

کعبۃ اللہ شریف کے دیدار کے وقت دعاء مقبول و مستجاب ہوتی ہے‘ یہ حدیث پاک سے ثابت ہے اور یہ حدیث مبارک قابل استناد ، لائق اعتبار ذخائر حدیث شریف میں موجود ہے۔ چنانچہ امام بیہقی کی السنن الکبری اور معرفۃ السنن والآثار میں، امام طبرانی کی معجم کبیر میں ، علامہ ہیثمی کی مجمع الزوائد میں، امام سیوطی کی جمع الجوامع میں حدیث پاک موجود ہے (دیکھئے: السنن الکبری للبیہقی، باب طلب الاجابۃ عند نزول الغیث حدیث نمبر: 6252، معرفۃ السنن والاثار للبیہقی حدیث نمبر 2092، معجم کبیر للطبرانی حدیث نمبر: 2092، جمع الجوامع ، حرف التاء المثناۃ ، حدیث نمبر: 333) عن ابی امامۃ سمعہ یحدث عن رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم قال تفتح ابواب السماء ویستجاب الدعاء فی اربعۃ مواطن عند التقاء الصفوف وعند نزول الغیث وعند اقامۃ الصلوۃ وعند رؤیۃ الکعبۃ ، ترجمہ: ابوامامہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے‘ حضرت نبی اکرم صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے ارشاد فرمایا: چار مقامات پر آسمان کے دروازے کھولے جاتے ہیں اور دعاء قبول کی جاتی ہے (1)صف بندی کے وقت (2)بارش نازل ہونے کے وقت ،(3) نماز قائم کرنے کے وقت ، (4)کعبۃ اللہ شریف کے دیدار کے وقت (معجم کبیر اور جمع الجوامع میں فی سبیل اللہ کے الفاظ کا اضافہ ہے یعنی راہ خدا میںصف بندی کے وقت (مجمع الزوائد ج 10، ص 238،حدیث نمبر: 17253) فتح القدیر میں امام ابن کمال نے لکھا ہے فان الدعاء مستجاب عند رؤیۃ البیت۔ ترجمہ: یقینا بیت اللہ شریف کے دیدار کے وقت دعاء مقبول ہوتی ہے۔ علامہ ابن عابدین شامی نے لکھا ہے فانہ عند ہا مستجاب۔ ترجمہ یقینا کعبۃ اللہ شریف کے دیدار کے وقت دعاء مقبول ہوتی ہے (ردالمحتار کتاب الحج ، فصل فی الاحرام وصفۃ المفرد) البحرالرائق وغیرہ میں ہے کہ امام اعظم ابوحنیفہ رحمۃ اللہ علیہ نے ایک صاحب کو وصیت کی‘ جنہوں نے مکہ مکر مہ سفر کا ارادہ کیا کہ وہ بیت اللہ شریف پر نظر پڑتے ہی اپنی دعاؤں کے مستجاب ہونے کے لئے دعاء کریں (البحرالرائق ، کتاب الحج ) واللہ اعلم بالصواب سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن۔

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com