***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > اخلاق کا بیان > آداب

Share |
سرخی : f 1361    عورت کی چھینک کا جواب کس طرح دینا چاہیے ؟
مقام : کاماریڈی,
نام : جواد خان
سوال:     اگر کوئی شخص عورتوں کی چھینک سن لے تو وہ کیا کرے ۔ کیا اس کو جواب دینا ضروری ہے ؟
............................................................................
جواب:     چھینکے نے والے نے اگر الحمدللہ کہا تو سننے والوں پر چھینک کے جواب میں یرحمک اللہ کہنا واجب ہے ‘ اگر کسی عورت کو چھینک آئے اور اجنبی مرد سن لے تو اس متعلق فقہاء کرام نے تفصیل بیان کی ہے ۔
اگر عورت عمر رسیدہ  نہیں ہے تو مرد کو چاہئے کہ دل میں یرحمک اللہ کہے اور اگر عورت عمررسیدہ ہو تو مرد اس چھینک کا جواب اتنی آواز سے دے کہ وہ عورت اس کو سن سکے ۔ اسی طرح مرد کی چھینک پر عمر رسیدہ عورت آواز سے جواب دے اور جو عمر رسیدہ نہ ہو وہ دل میں یرحمک اللہ کہہ لے۔
فتاوی عالمگیری ج 5 ص 326 میں ہے
  ’’تشمیت العاطس واجب ان حمد العاطس ‘‘ اور اسی کے ص 327 میں ہے
’و ان کانت شابۃ یرد علیھا فی نفسہ ‘‘اور رد المحتارج 5 ص 261 میں ہے
  ’’ لا یشمتھا و لا یرد السلام علیھا بلسانہ ۔ ۔ ۔  ان کانت عجوزاً رد الرجل علیھا بلسانہ بصوت  تسمع ۔ ۔ ۔ و کذا الرجل اذا سلم علی امرأۃ اجنبیۃ فالجواب فیہ علی العکس ‘‘
واللہ اعلم بالصواب –
سیدضیاءالدین عفی عنہ ،
شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ
بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔www.ziaislamic.com
حیدرآباد دکن
All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com