***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > اخلاق کا بیان > آداب

Share |
سرخی : f 593    کھانے سے پہلے اوربعدمیں ہاتھ دھونا
مقام : لاڈبازار،حیدرآباد،انڈیا,
نام : شیخ عابد علی
سوال:     میں نے ایک تقریب میں سناکہ ایک صاحب کہہ رہے تھے کہ کھانے سے پہلے اور کھانے کے بعد ہاتھ دھوکر نہیں پونچنا چاہئے ۔ کیایہ صحیح ہے۔ شرعی حکم بیان فرمائیں۔
............................................................................
جواب:     کھانے سے پہلے اور کھانے کے بعد ہاتھ دھونامسنون ہے ۔ اس کا طبی اور سائنسی پہلو یہ ہے کہ کھانے سے پہلے ہاتھ اس لئے دھویا جاتا ہے کہ ہاتھ پر موجود میل کچیل اور جراثیم دور ہوجائیں ۔ کھانے سے پہلے ہاتھ دھوکر پونچنے سے رومال یا تولیہ پر موجود جراثیم ہاتھ پر آجاتے ہیں اور ہاتھ دھونے کا مقصد باقی نہیں رہتا۔ اس لئے کھانے سے پہلے ہاتھ  نہیں پونچناچاہئے۔اسکے برخلاف کھانے کے بعد ہاتھ دھوکر پونچ لینابہتر ہے تاکہ کھانے کااثر مکمل طور سے زائل ہوجائے۔  
درمختار ج 5ص 239میں ہے۔ وسنۃ الاکل ۔ ۔ ۔  و غسل الیدین قبلہ و بعدہ ۔
ردالمحتار کے اس صفحہ پر ہے ۔ ولایمسح یدہ المندیل لیبقی اثر الغسل وبعدہ ۔ ۔ ۔  ویمسھا لیزول اثر الطعام ۔  
ترجمہ : کھانے سے پہلے اور کھانے کے بعد ہاتھ دھونامسنون ہے ۔ کھانے سے پہلے رومال سے ہاتھ نہ پونچے تاکہ دھونے کااثرباقی رہے اور کھانے  کے بعد ہاتھ دھوکر پونچ لے تاکہ کھانے کااثر دور ہوجائے۔  
واللہ اعلم بالصواب–
سیدضیاءالدین عفی عنہ،
نائب شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ
بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر۔ WWW.ZIAISLAMIC.COM
حیدرآباد دکن
31-05-2010
All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com