***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > اخلاق کا بیان > آداب

Share |
سرخی : f 986    جوتے اُتار کرکھانا تناول کرنا
مقام : حیدرگوڑہ,
نام : عبد الاحد
سوال:    

میں آپ کے جوابات شوق سے پڑھتا ہوں اور اس سے دینی معلومات میں بہت فائدہ محسوس کرتا ہوں، میرا ایک سوال ہے، میرے ایک ساتھی نے تقریب میں کھانا کھاتے وقت مجھ سے کہا کہ کھاتے وقت جوتا اُتارنا چاہئے ، مفتی صاحب ! میں اس کے بارے میں جاننا چاہتاہوں ،کیا کوئی حدیث میں اس کا ذکر آیا ہے یا پھر اس کی کیا وجہ ہے ؟ تشفی بخش جواب دیں تو مہربانی ہوگی ۔


............................................................................
جواب:    

کھانا تناول کرنے کے موقع پر جوتے اُتارنے سے متعلق مستدرک علی الصحیحین میں حدیث پاک وارد ہے ، اور یہ عمل جسم کے لئے راحت وآرام کا موجب ہے: عن أنس بن مالک رضی اللہ عنہ قال قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم إذا أکلتم فاخلعوا نعالکم فإنہ أروح لأبدانکم۔ ترجمہ : سیدناانس بن مالک رضی اللہ عنہ سے روایت ہے اُنہوں نے فرمایا: حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: جب تم کھانا تناول کرنے کا ارادہ کرو تو اپنے جوتے اُتاردو! کیونکہ یہ تمہارے جسموں کے لئے راحت کا باعث ہے ۔ (مستدرک علی الصحیحین ، کتاب الاطعمۃ ، حدیث نمبر:7229) واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com