AR 475 : دعاء اور اس کی قسمیں

دعاء اور اس کی قسمیں

فتاویٰ عالمگیریہ میں ’’مجموع الفتاویٰ ‘‘کے حوالہ سے لکھا ہے :

عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ الْحَنَفِيَّةِ قَالَ : الدُّعَاءُ أَرْبَعَةٌ : دُعَاءُ رَغْبَةٍ وَدُعَاءُ رَهْبَةٍ وَدُعَاءُ تَضَرُّعٍ وَدُعَاءُ خُفْيَةٍ ، فِي دُعَاءِ الرَّغْبَةِ يَجْعَلُ بُطُونَ كَفَّيْهِ نَحْوَ السَّمَاءِ ، وَفِي دُعَاءِ الرَّهْبَةِ يَجْعَلُ ظَهْرَ كَفَّيْهِ إلَى وَجْهِهِ كَالْمُسْتَغِيثِ مِنْ الشَّرِّ ، وَفِي دُعَاءِ التَّضَرُّعِ يَعْقِدُ الْخِنْصَرَ وَالْبِنْصِرَ وَيُحَلِّقُ الْإِبْهَامَ وَالْوُسْطَى وَيُشِيرُ بِالسَّبَّابَةِ ، وَدُعَاءُ الْخُفْيَةِ مَا يَفْعَلُهُ الْمَرْءُ فِي نَفْسِهِ ، كَذَا فِي مَجْمُوعِ الْفَتَاوَى نَاقِلًا عَنْ شَرْحِ السَّرَخْسِيِّ .

حضرت محمد بن الحنفیہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ دعاء کی چار قسمیں ہیں:

(1) دعاء رغبت (2) دعاء رہبت(3) دعاء تضرع (4) دعاء خفیہ۔

(1) ’’دعاء رغبت‘‘:

بندہ کے اپنے حصولِ مقاصد کے لئے عموماً جو دعا کی جاتی ہے اس کو ’’دعاء رغبت‘ کہتے ہیں۔

اس دعاء کے کرنے کا طریقہ یہ ہے کہ دعاء کرتے وقت اپنے دونوں ہاتھوں کی ہتھیلیوں کا رخ آسمان کی طرف کیا جائے .

اور افضل یہ ہے کہ دونوں ہتھیلیوں کو پھیلا کر اس طرح رکھیں کہ آپس میں مل نہ جائیں اور ان دونوں کے درمیان تھوڑا سا فاصلہ رہے۔ اور دونوں ہاتھ سینہ کے مقابل رہیں۔

(2)’’ دعاء رہبت‘‘

یہ ہے کہ بندہ اللہ تعالی سے کسی شر اور بلاء سے دفع کرنے کے لئے استغاثہ کرے۔

اس دعاء کے کرنے کا طریقہ یہ ہے کہ جس طرح انسان دشمن سے بچنے کے لئے اپنے ہاتھوں کی پیٹھ کو اپنے چہرہ کی طرف کر لیتا ہے اسی طرح دعاء کرنے والا بھی اپنی ہتھیلیوں کو الٹ کر ان کا رخ زمین کی طرف کرے اس طرح کہ ان کی پیٹھ آسمان کی طرف ہو۔

(3)’’ دعاء تضرع‘‘:

الحاح اور زاری کی دعاء ہے۔

اس دعاء کے کرنے کا طریقہ یہ ہے کہ دعاء کرنے والا اپنے سیدھے ہاتھ کی شہادت کی انگلی آسمان کی طرف اشارہ کرتے ہوئے دعا ء کرے ،اس طرح کہ خنصر اور بنصر یعنی سیدھے ہاتھ کی آخری چھوٹی انگلی اور اس کے بعد والی انگلی کو بند کرے، اور انگوٹھے اور تیسری انگلی سے حلقہ بنائے رکھے۔

(4)’’ دعاء خفیہ‘‘:

یہ وہ پوشیدہ دعاء ہے جس کو بندہ اپنے رب سے دل ہی دل میں کرلیتا ہے۔

 (ملخص از:نور المصابیح ترجمہ زجاجۃ المصابیح،جلد:6،ص:131)

www.ziaislamic.com

 




submit

  AR: 511   
تحفظ شریعت ملت کی اولین ذمہ داری
..........................................
  AR: 510   
اسلام حقوق انسانی کامحافظ
..........................................
  AR: 509   
تعلیمات حضرت غوث اعظم رحمۃ اللہ علیہ
..........................................
  AR: 508   
حضرت غوث اعظم رحمۃ اللہ علیہ عظمت و جلالت
..........................................
  AR: 507   
حضرت امام ربانی رحمۃ اللہ علیہ کی عظمت اور مقبولیت
..........................................
  AR: 506   
قرآن کریم تمام علوم کا سرچشمہ
..........................................
  AR: 505   
امام حسین رشدوہدایت کے مینار اور حق صداقت کے معیار
..........................................
  AR: 504   
امام عالی مقام حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ کی عظمت و استقامت
..........................................
  AR: 503   
واقعۂ شہادت کا پُرسوز بیان
..........................................
  AR: 502   
راہ خدا میں خرچ کرنے کی فضيلت
..........................................
  AR: 501   
لیلۃ الجائزۃ (انعام والی رات)
..........................................
  AR: 500   
اعتکاف احکام ومسائل
..........................................
  AR: 499   
تذکرہ ام المؤمنین سیدہ عائشہ صدیقہ رضی اللہ تعالی عنہا
..........................................
  AR: 498   
ماہ رمضان المبارک کی فضیلت وعظمت پرمشتمل پچیس 25 احادیث شریفہ
..........................................
  AR: 497   
روزہ فوائد وثمرات
..........................................
  AR: 496   
روزہ فوائد وثمرات
..........................................
  AR: 495   
عشرۂ ذی الحجہ فضائل واحکام
..........................................
  AR: 494   
رئیس العلماء حضرت علامہ مولانا سید شاہ طاہر رضوی قادری نجفی رحمۃ اللہ تعالی علیہ صدرالشیوخ جامعہ نظامیہ
..........................................
  AR: 493   
غزوۂبدر،ایک مطالعہ
..........................................
  AR: 492   
رمضان کے تین عشرے اور ان کی خصوصیات
..........................................
Copyright 2008 - Ziaislamic.com All Rights reserved