***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > تلاش کریں

Share |
سرخی : f 1153    خطبہ جمعہ کے دوران بیٹھنے کا مستحب طریقہ
مقام : مہارشٹرا ،انڈیا,
نام : مجیب الدین فاروقی کلمنوری
سوال:    

جمعہ کے دن خطبہ سننے کے وقت لوگ مختلف طریقوں سے بیٹھتے ہیں ، کوئی دوزانوں بیٹھے ہوئے ہوتے ہیں اور کوئی چار زانو، اور کوئی کسی اور طریقہ سے ، اس کے بارے میں دریافت کرنا ہے کہ دوران خطبہ کس طرح بیٹھنا بہتر ہے ؟


............................................................................
جواب:    

خطبہ جمعہ کے لئے شریعت اسلامیہ میں جو آداب و مستحبات بتلائے گئے ہیں ان کی رعایت اولیٰ و بہتر ہے اور باعث ازدیاد ثواب اورموجب فضیلت ہے ۔

خطبہ کے وقت کسی مخصوص ہیئت سے بیٹھنا فرض و واجب نہیں قرار دیا گیا بلکہ حسب سہولت دوزانو ، چار زانو یا اکڑوں بیٹھنے کی اجازت دی گئی ، تاہم ان تمام نشستوں میں نمازی کی طرح دو زانو بیٹھنے کو مستحب و اولیٰ قرار دیا گیا۔

 جیسا کہ فتاوی عالمگیری ، ج : 1، کتاب الصلوٰۃ ، الباب السادس عشر فی صلوٰۃ الجمعۃ،ص :148میں ہے :

إذا شہد الرجل عند الخطبۃ إن شاء جلس محتبیا او متربعا او کما تیسر؛ لأنہ لیس بصلاۃ عملا وحقیقۃ ۔

اور فتاوی عالمگیری کے اسی صفحہ پر ہے :

ویستحب ان یقعد فیھا کما یقعد فی الصلوٰۃ ۔

 واللہ اعلم بالصواب ۔

 

مفتی سیدضیاءالدین نقشبندی قادری عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ ، بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر۔ حیدرآباد دکن۔ www.ziaislamic.com

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com