***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > تلاش کریں

Share |
سرخی : f 129    نبیٴ اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کا پسینۂ مقدسہ
مقام : india,
نام : khaled
سوال:    

میں اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے پسینۂ شریف کے بارے میں جاننا چاہتاہوں کہ آپ کا پسینۂ شریف کی کیفیت کیا تھی،ازراہ کرم بیان فرمائیں۔


............................................................................
جواب:    

حضرت رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کا پسینۂ مبارک چہرۂ انور پر موتیوں کی طرح معلوم ہوتا، ام المؤمنین حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں: کان عرق رسول اللّٰه صلی اللّٰه عليه وسلم فی وجهه مثل اللؤلؤ اطيب ريحا من المسک الاذ فر۔حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا پسینۂ مبارک آپ کے چہر ۂ انور پر آبدار موتیوں کی طرح ہوتااور اس کی مہک مشک سے زیادہ خوشبودار ہوتی۔(سبل الھدی ج 2ص85( سرکار دوعالم صلی اللہ علیہ وسلم کے پسینۂ مبارک کی خوشبو مشک وعنبر اور تمام خشبوؤں سے زیادہ خوشبودار ہوتی۔ حضرت فاروق اعظم رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں : کان ريح عرق رسول اللّٰه صلی اللّٰه عليه وسلم ريح المسک بابی وامی لم ارقبله ولابعده مثله۔ حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے پسینۂ مبارک کی خوشبو مشک کی خوشبو ہے، میرے ماں باپ آپ پر فداہوں !میں نے آپ جیسا نہ آپ سے پہلے دیکھا اور نہ آپ کے بعد۔ (سبل الھدی ج 2ص85( صحیح مسلم شریف ج2ص257اورجامع ترمذی شریف ج 2ص21 میں حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے فرماتے ہیں: ولاشممت مسکا قط ولاعطرا کان اطيب من عرق رسول اللّٰه صلی اللّٰه عليه وسلم۔ میں نے حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے پسینۂ مبارک سے زیادہ خوشبودار نہ کوئی مشک سونگھا اور نہ کوئی عطر۔ حضرت ام سلیم رضی اللہ عنہا بیان فرماتی ہیں حضوراکرم صلی اللہ علیہ وسلم ہمارے پاس تشریف لایاکرتے اور آرام فرماتے تو آپ حضوراکرم صلی اللہ علیہ وسلم کا پسینۂ مبارک جمع کرتیں اور اسے خوشبو میں استعمال کرتیں۔ حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا : اے ام سلیم ! یہ کیا کررہی ہو؟ انہوں نے عرض کیا : یہ آپ کا پسینۂ مبارک ہے جس کو ہم بطور خوشبو استعمال کرتے ہیں اور یہ بہترین خوشبو ہے۔ مسلم شریف کی روایت میں ہے انہوں نے عرض کیا یارسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم : نرجو برکته لصبياننا قال اصبت۔ہم اس سے اپنے بچوں کے لئے برکت حاصل کرتے ہیں‘ آپ نے فرمایا : تم نے درست کیا۔ (صحیح مسلم شریف ج 2ص 257۔زجاجۃ المصابیح ج5ص 32/33)حضرت ام سلیم رضی اللہ عنہا کے صاحبزاد ے حضرت انس بن مالک رضی اللہ عنہ نے اپنے وصال مبارک کے وقت وصیت فرمائی کہ حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کا پسینۂ مبارک انکے کفن کی خوشبو میں استعمال کیا جائے ۔(حاشیۂ زجاجۃ المصابیح ج5ص33بحوالہ مرقات( واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ حیدرآباد دکن۔

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com