***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > تلاش کریں

Share |
سرخی : f 1376    عقائد سے متعلق چند سوالات کے جوابات
مقام : حیدرآباد ۔ انڈیا,
نام : الیاس حسین
سوال:    

السلام علیکم! میرے چند سوالات ہیں‘ کیا حضور اقدس صلی اللہ علیہ وسلم اللہ سبحانہ تعالیٰ کے نور سے ہیں؟ کیا سرکار دو عالم صلی اللہ علیہ وسلم عالم الغیب ہیں؟ کیا فاتحہ‘ سنت‘ واجب یا نفل ہے؟


............................................................................
جواب:    

وعلیکم السلام و رحمۃ اللہ و برکاتہٗ! حضور اکرم صلی اللہ علیہ والہ وسلم نور ہیں‘ اللہ تعالیٰ نے اپنے نور سے آپ کا نور سب سے پہلے بنایا‘ حضرت شیخ عبدالحق محدث دہلوی رحمۃ اللہ علیہ فرماتے ہیں در حدیث صحیح و را دشدہ کہ اول ما خلق اللہ نوری (مدارج النبوۃ‘ ج 2‘ ص 2) یقینا اللہ تعالیٰ عالم الغیب ہے اور انبیاء کرام علیھم الصلوٰۃ والسلام کو علم غیب عطا بھی فرماتا ہے جیسا کہ فرماتا ہے عَالِمُ الْغَیْْبِ فَلَا یُظْہِرُ عَلَی غَیْْبِہِ أَحَداً۔ إِلَّا مَنِ ارْتَضَی مِن رَّسُول ۔ ترجمہ: اللہ تعالیٰ عالم الغیب ہے‘ اپنے غیب پر انہیں کو مطلع فرماتا ہے جو اس کے چنندہ رسول ہیں(سورۃ الجن‘ آیت: 26-27) ‘ اور فرمایا: وَعَلَّمَکَ مَا لَمْ تَکُنْ تَعْلَمُ۔ ترجمہ : حبیب آپ جو نہیں جانتے تھے وہ سب اللہ تعالیٰ نے بتایا (سورۃ النسائ‘ آیت: 113) ۔ یہ آیت کریمہ بتلارہی ہے کہ اللہ تعالیٰ نے حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو سب کچھ سکھایا چاہے وہ موجود ہو یا غائب‘ ظاہر ہو یا پوشیدہ۔ فاتحہ چند جائز اور اچھے امور کے مجموعہ کا نام ہے‘ اس میں اطعام طعام‘ تلاوت قرآن‘ ایصال ثواب کیا جاتا ہے‘ یہ سب کام انجام دینے کی احادیث شریفہ میں فضیلت آئی ہے‘ اسی لئے فاتحہ دینا مستحب و مستحسن ہے۔ واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com