***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > تلاش کریں

Share |
سرخی : f 1449    پانچویں رکعت میں شریک جماعت ہونے کا حکم
مقام : انڈیا,
نام : محمد رحیم
سوال:    

مجھے نماز کے بارے میں آپ سے ایک سوال کرنا ہے ، چاررکعت والی نماز میں امام صاحب اگر غلطی سے پانچویں رکعت کے لئے کھڑے ہوجائیں ایسے وقت کوئی صاحب جماعت میں شامل ہوتو اُنہیں کیا کرنا چاہئے ؟ برائے مہربانی مسئلہ بیان فرمائیں۔ 


............................................................................
جواب:    

اگر امام چار رکعت والی نماز میں سہوًاپانچویں رکعت کے لئے کھڑے ہوجائے اور اس وقت کوئی شخص شریک جماعت ہوتو اقتداء کرنے والے اس شخص کی نماز فاسد ہوجائے گی خواہ امام نے چوتھی رکعت کا قعدہ کیا ہو یا نہ کیاہو ، اگر امام چوتھی رکعت کا قعدہ کرکے پانچویں کے لئے کھڑا ہوتو فرض کی تکمیل ہوجانے کے بعد اقتداء ہورہی ہے ، اس وجہ سے اقتداء درست نہیں اور اگر امام چوتھی رکعت کا قعدہ نہ کرے تو پانچویں رکعت کے سجدہ کے ساتھ ہی امام ومقتدی سب کی نماز فاسد ہوگی ۔

        رد المحتار میں ہے :ولو قام الإمام إلي الخامسة في صلاة الظهر فتابعه المسبوق إن قعد الإمام علي رأس الرابعة تفسد صلاة المسبوق ، وإن لم يقعد لم تفسد حتي يقيد الخامسة بالسجدة فإذا قيدها بالسجدة فسدت صلاة الکل ؛ لأن الإمام إذا قعد علی الرابعة تمت صلاته في حق المسبوق فلا يجوز للمسبوق متابعته۔ (البحر الرائق شرح کنز الدقائق)

واللہ اعلم بالصواب –

سیدضیاءالدین عفی عنہ

شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ

بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر، حیدرآباد دکن۔

 

www.ziaislamic.com

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com