***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > تلاش کریں

Share |
سرخی : f 1509    چہارشنبہ منحوس ہے یامبارک؟
مقام : امریکہ,
نام : فریدالدین
سوال:    

چہارشنبہ کے دن کے بارے میں سمجھا جاتاہے کہ یہ دن منحوس ہوتا ہے، اس دن کوئی بڑاکام نہیں کرنا چاہئے یہ بات کس حدتک درست ہے ؟


............................................................................
جواب:    

کسی دن یا کسی بھی چیزکو نامسعود ومنحوس سمجھناغیراسلامی نظریہ ہے ، یہ حقیقت ہے کہ ایک دن دوسرے دن پر فضیلت وبرتری رکھتا ہے، ایک وقت دوسرے وقت کی بہ نسبت زیادہ برکت ورحمت والا ہوتا ہے، لیکن اس کے علاوہ دیگراوقات، ایام وشہور کو بے برکت ومنحوس سمجھنادرست نہیں ، جہاں تک چہارشنبہ کی بات ہے توصحیح حدیث پاک میں اس کی فضیلت آئی ہے صحیح مسلم شریف کتاب صفۃالمنافقین واحکامہم باب صفۃ القیامۃ والجنۃ والنارج2 ص371میں سیدنا ابوہریرۃرضی اللہ عنہ سے تفصیلی روایت مذکورہے روایت کا ایک حصہ ملاحظہ ہو:(حدیث نمبر:2879) عن ابی ھریرۃ ۔ ۔ ۔ فقال۔ ۔ ۔ وخلق النور یوم الاربعاء ۔ ترجمہ:حضورصلی اللہ علیہ واٰلہ وسلم نے ارشادفرمایا ۔ ۔ ۔ اور اللہ تعالی نے نور کو چہارشنبہ کے دن پیدا فرمایا۔ مذکورہ حدیث پاک سے معلوم ہوا کہ چہارشنبہ وہ مبارک ومقدس دن ہے جس میں نور کی پیدائش ہوئی لہذا یہ تصورغیر درست ہے کہ اس میں کوئی بڑااور اہم کام نہیں کرنا چاہئے، اس دن کوئی بھی اہم اور خوشی کاکام سرانجام دیناان شاء اللہ تعالی مبارک ہے ۔ واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com