***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > تلاش کریں

Share |
سرخی : f 1527    کسی مقام کے دور ونزدیک دوراستے ہو ں تو سفر کاحکم
مقام : دوحہ، قطر,
نام : فصیح الدین
سوال:    

میرا سفر کے بارے میں ایک سوال ہے کہ ایک شخص سفر کررہا ہے، وہ جس مقام پر جارہا ہے اُس کے دوراستے ہیں ، دونوں راستوں سے وہ اپنی منزل تک پہنچ سکتا ہے ، ایک راستہ لمباہے جو سفر کی مسافت سے زیادہ ہے ، دوسرا راستہ قریب کا ہے جو سفر کی مسافت کے اندر ہی ہے لیکن یہ راستہ صاف نہیں ہے ، ایسے وقت مذکورہ مقام پر جانے والے شخص کو قصر کرنا چاہئے یا نماز یں پوری پڑھنی چاہئے ؟


............................................................................
جواب:    

کسی مقام پر جانے کے اگر دوراستے ہوں ‘ ایک راستہ شرعی مسافت کے برابر یا اس سے زائد ہو اور دوسرا راستہ شرعی مسافت سے کم ہو تو ایسی صورت میں آدمی جس راستہ سے سفر کرے گا اسی کا اعتبار کیا جائے گا ، اگر لمبا راستہ طے کرے جس سے مسافت شرعی مکمل ہوجاتی ہو تو وہ ازروئے شریعت مسافر ہوگا ، اُس کے لئے قصر کا حکم ہوگا اور اگر اُسی مقام تک پہنچنے کے لئے شرعی مسافت سے کم فاصلہ والا راستہ اختیار کرے تو وہ شرعًا مسافر نہ ہوگا لہذا نمازیں مکمل اداکرے گا۔

جیساکہ درمختار میں ہے :ولو لموضع طریقان احدھما مدۃ السفر والاخر اقل قصر فی الاول لا الثانی ۔ (درمختار ، کتاب الصلوٰۃ ، باب صلوٰۃ المسافر)

واللہ اعلم بالصواب – سید ضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com