***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > تلاش کریں

Share |
سرخی : f 1547    ٹوپی یا عمامہ پر سجدہ کرنے کا حکم
مقام : جے پور، بذریعہ ای میل,
نام : قدرت اللہ
سوال:    

مفتی صاحب !میں اکثر ٹوپی پہنتا ہوں اور کبھی عمامہ باندھتا ہوں ، نماز میں سجدہ کے وقت کبھی ٹوپی یا عمامہ پیشانی کے آدھے حصہ پر ہوتا ہے جب میں سجدہ کرتا ہوں تو عمامہ یا ٹوپی کی وجہ سے میری پیشانی زمین کو نہیں لگتی ، کیا اس طرح سجدہ کرنے میں کوئی حرج ہے ؟ اس سے نماز میں کوئی خرابی تو نہیں آتی ؟ مجھے اس مسئلہ میں تشویش ہے ، اگر آپ اس کا جواب عطا فرمائیں تو بڑی مہربانی ہوگی اور میرے علم میں اضافہ ہوگا۔ جزاک اللہ ۔


............................................................................
جواب:    

ٹوپی یا عمامہ پیشانی پر ہونے کی وجہ سے سجدہ کے موقع پر پیشانی زمین پر نہ لگے اور ٹوپی یا عمامہ درمیان میں حائل ہوں تو اس صورت میں نماز مکروہ ہوتی ہے ، لہذا آپ آئندہ نماز کے وقت اس کا اہتمام کریں کہ آپ کی پیشانی سجدگاہ سے مس ہو اور ٹوپی یا عمامہ درمیان میں حائل نہ ہو۔ اگر ٹوپی یا عمامہ اس نوعیت کا ہے کہ اُس کی وجہ سے زمین کی سختی محسوس نہیں ہوتی تو سجدہ درست نہ ہوگا، لہذا نماز بھی صحیح نہ ہوگی۔

        جیساکہ فتاوی عالمگیری میں ہے :ویکرہ ان یسجد علی کور عمامتہ ، کذا فی الذخیرۃ انما یکرہ اذا لم یمنع وجدان حجم الارض فانہ لو منع ذلک لم یجز اصلا۔ کذا فی البرجندی ۔(فتاوی عالمگیری ،کتاب الصلوٰۃ ، الفصل الثانی فیما یکرہ فی الصلوٰۃ ومالا یکرہ )

 واللہ اعلم بالصواب

سیدضیاءالدین عفی عنہ

شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ

بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔

حیدرآباد دکن

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com