***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > تلاش کریں

Share |
سرخی : f 613    شب معراج بیت المقدس میں خصوصی نماز
مقام : انڈیا,
نام : سید عمر
سوال:    

شب معراج کو نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے تمام انبیاء علیہ السلام جو نماز پڑھائی تھی، وہ کونسی نماز تھی؟ یہ کونسی حدیث میں ہے؟


............................................................................
جواب:    

شب معراج میں حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے انبیاء کرام علیہم السلام کی جو امامت فرمائی اس سے متعلق تفسیر خازن میں مذکور ہے کہ اللہ تعالی نے حضور پاک صلی اللہ علیہ والہ وسلم کی خاطر انبیاء علیہم الصلوۃ والسلام کو جمع فرمایا تاکہ حضور صلی اللہ علیہ والہ وسلم ان کی امامت فرمائیں اور تمام انبیاء کرام علیہم الصلوۃ والسلام آپ کی عظمت و فضیلت اور آپ کی برتری کو جان لیں- واقعۂ معراج کی تفصیلی روایات صحیح بخاری و صحیح مسلم اور دیگر کتب حدیث میں موجود ہے، امامت کے بارے میں ارشاد ہے : فحانت الصلوة فاممتهم- ترجمه: نماز کا وقت ہوا تو نے انبیاء کی امامت کی- (صحیح مسلم، کتاب الایمان، باب فی ذکر المسیح ابن مریم والمسیح الدجال، حدیث نمبر: 448) اس حدیث پاک کی شرح میں ملا علی قاری رحمۃ اللہ علیہ نے لکھا ہے: و لعل المراد بها صلوة التحية او يراد بها صلوة المعراج علی الخصوصية- ترجمہ: شاید اس نماز سے مراد نمازِتحیة المسجد ہے یا معراج کی خصوصی نماز ہے- (مرقاۃ المفاتیح، کتاب الفضائل، باب فی المعراج) واللہ اعلم بالصواب سید ضیاء الدین عفی عنہ شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ وبانی ابوالحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر www.ziaislamic.com حیدرآباد ، دکن ،انڈیا

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com