***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > تلاش کریں

Share |
سرخی : f 738    امام کے لئے محراب کے اندر نماز پڑھنے کی کراہت
مقام : کاماریڈی,انڈیا,
نام : محمد عادل
سوال:    

میں نے ہمارے امام صاحب کو دیکھا کہ محراب سے کچھ باہر رہ کر نماز پڑھتے ہیں‘ میرے پوچھنے پر امام صاحب نے بتایا کہ محراب کے اندر نماز پڑھنامکروہ ہے؟ مفتی صاحب ! کیا یہ بات صحیح ہے؟


............................................................................
جواب:    

امام صاحب کے لئے محراب کے اندر ٹہر کر نماز اداکرناازروئے شریعت مکروہ ہے ، اگر قدم محراب کے باہر رہیں اور سجد ہ محراب کے اندرکیا جائے تو کوئی کراہت نہیں‘ ہاں اگر نمازیوں کی اس قدر کثرت ہو کہ مسجد تنگ ہوجائے تو ایسی صورت میں محراب کے اندر نماز اداکرنا‘ مکرو ہ نہیں۔ البحرالرائق ج2‘ ص45 ‘کتاب الصلوۃ‘ باب مایفسد الصلوۃ ومایکرہ فیہا میں ہے: ( قولہ وقیام الإمام لا سجودہ فی الطاق ) أی المحراب .... فکرہ مطلقا ولہذا قال الولوالجی فی فتاویہ وصاحب التجنیس إذا ضاق المسجد بمن خلف الإمام علی القوم لا بأس بأن یقوم الإمام فی الطاق لأنہ تعذر الأمر علیہ وإن لم یضق المسجد بمن خلف الإمام لا ینبغی للإمام أن یقوم فی الطاق لأنہ یشبہ تباین المکانین اھ۔ واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ ، بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن۔

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com