علاج السالکین  
حضرت ابوالحسنات سید عبداللہ شاہ نقشبندی مجددی قادری محدث دکن رحمۃ اللہ علیہ : مصنف
  سرورق     << تمام کتابیں دیکھیں  
 
Share |
ڈاؤن لوڈ
Download Book in pdf
 
کتاب کاؤنٹر
This Book Viewed:
587 times
 
تلاش کریں
 

 

 
 
دل کے علاج کی ترغیب

دل کے علاج کی ترغیب

       اے خدا کے ڈھونڈھنے والو! بیمار دل کب تک پہلو میں لئے رہوگے؟ دیکھو بیماری بڑھ رہی ہے،بیماری کا انجام موت ہے۔ اگر دل مر گیا تو اس مردہ دل کو لے کر کیا کرو گے؟ آخرت کی سعادت تو زندہ دل کے ساتھ ہے۔ زندہ دل کو قلب سلیم کہتے ہیں۔ اسی کی طرف زور دار الفاظ میں رغبت دلائی گئی ہے۔ ارشاد ہوتا ہے۔ إِلَّا مَنْ أَتَى اللَّهَ بِقَلْبٍ سَلِيم ۔جہاں مال ہی کام آئے گا نہ اولاد، وہاں وہ دل کام آئے گا جو دل کی بیماریوں سے صحیح و سالم ہے۔

       میرے پیارے دل !تو کسی بیمار کو دیکھا ہی نہیں ،تجھے کیا خبر کہ بیماری میں کیا کرتے ہیں اور تو بیمار کیا کررہا ہے۔ فرض کرو کہ دنیا کا ایک خود مختار بادشاہ ہے۔ اپنی ساری خواہشات کو وہ پورا کرسکتا ہے، دنیا کی کوئی ایسی لذت نہیں کہ جو وہ اس کو حاصل نہ کرسکے ،اتفاق سے ہوگیا وہ بیمار ،سچ بتا اے دل اب وہ کیا کرے گا، طبیبوں کوبلائے گا، دواساز کو جمع کرے گا،کڑوی سے کڑوی دوا کو گو وہ کیسی ہی ناگوار ہو خوشی سے پیئے گا۔ ساری لذتوں کو خیرباد کہہ کر صرف طبیب کی بتائی ہوئی چیزوں کو استعمال کرے گا۔ اس سے گو وہ لاغر ہوتا جائے گا مگر دن بدن اس کی بیماری میں گھٹاؤ ہونا شروع ہوگا اور اس کو صحت ہوتی جائے گی۔ اس اثناء میں اگر اس کا نفس پرہیز توڑنا چاہیے گا تو شروع بیماری کے دوران اور تکلیفیں پیش نظر ہوئیں گے۔ موت آنکھوں کے سامنے پھرے گی، شماتت اعداء کا خیال آئے گا تو نفس کو ملامت کرے گا اور ہر گز پرہیز نہ توڑے گا، ہمیشہ اس کو شفا کا خیال، بدن کی صحت، آرام و راحت کی زندگی کڑوی سے کڑوی دوا پینے کے لئے ابھارتے رہیں گے۔ لذتوں کا چھوڑنا، ناگوار چیزوں پر صبرکرنا اس کو آسان ہوگا۔

       میرے پیارے دل !دیکھ بیمار اس طرح بیماری کا علاج کیا کرتے ہیں تو بھی کبھی طبیب روحانی کو نبض دکھایا اور کبھی علماء ربانی سے مشورہ لیا اور اُن کی بتائی ہوئی کڑوی دوا کا کبھی استعمال کیا، کبھی تجھکو پرہیز کا بھی خیال آیا؟جب یہ کچھ نہ کیا تو سچ بتا پھر تیری بیماری جائے تو کس طرح جائے۔

       اے دل !مجھے تو تیرے آثار کچھ اچھے نہیں دکھتے ،کیا سچ مچ تو مردہ دل ہی کہلانا چاہتا ہے، شیطان کی شماتت کا بھی تجھ کو کچھ خیال نہیں ،کب تک ہاتھ پر دھرے بیٹھا رہے گا؟ چل اٹھ اب علاج میں سستی نہ کر۔ ہمت کر ہمت ہی سے مشکل سے مشکل کام آسان ہوجاتے ہیں۔ انسان اگر ہمت کرتا ہے تو پرندوں کو ہوا سے، مچھلی کو دریاکی تہ سے، سونے چاندی کو سخت پہاڑوں کے اندر سے، وحشی جانوروں کو لق و دق جنگلوں سے ،درندوں کو ان کی گوئی سے نکال لاتا ہے۔ جب یہ ہمت کرتا ہے تو زہریلے سانپوں کو پکڑتا ہے پھر ان کو کھیل بناتا ہے، ان سے تریاق تیار کرتا ہے۔

       انسان کی ہی ہمت کا نتیجہ ہے کہ توت کے پتوں سے کیڑوں کی پرورش ہوتی ہے پھر اس سے ریشمی تھان بن بن کر ہمارے سامنے آتے ہیں۔

       اللہ رے انسان کی ہمت !زمین پر ہوکر آسمانوں پر دوڑ لگاتا ہے،تاروں کی سیر کا اندازہ کرتا ہے، علم ہیئت کے دقیق سے مسائل میں کس کس طرح سے موشگافیاں کرتا ہے۔

       انسان ہمت کرتا ہے تو کیا نہیں ہوتا۔ سرکش گھوڑا اس کو سواری دیتا ہے۔ وحشی کتا اور اڑتا ہوا باز اس کے لئے شکار لاتا ہے۔

       اوغافل انسان !ہمت کرکے تو سب کچھ کرتا ہے ایک نہیں کرتا ہے تو دل کا علاج۔

       دیکھ تیری یہ غفلت تجھے بُرے دن دکھائے گی۔ ہزار دوا کی جائے پھر بھی ایک دن اس جسم کو مرنا ہے۔ باوجود اس کے تو طبیب اجساد کی طرف ہمیشہ مشغول رہتا ہے۔ ابدالآباد تک تیرے ساتھ رہنے والے دل کی تجھے کچھ پروا ہی نہیں، کبھی اس کے علاج کے لئے تو طبیب قلوب کی طرف متوجہ نہیں ہوتا۔ آخر یہ کیا معاملہ ؟   ؂

چند چند از حکمت یونیاں حکمت ایمانیاں را ہم بدال

 

 

 
 
فہرست

شکایت
...............................
>>
پہلی علامت
...............................
>>
محبت کی کسوٹی
...............................
>>
بیماریٔ دل کی شدت و کمی
...............................
>>
دوسری علامت
...............................
>>
دل کی صحت کی علامتیں
...............................
>>
دل کی بیماریوں کا مادہ
...............................
>>
دل کے بیمار کا پرہیز
...............................
>>
دل کے طبیب
...............................
>>
دل کے علاج کی ترغیب
...............................
>>
دل کے بیماریوں کے ادویہ
...............................
>>
دل کی بیماریوں کے اسباب
...............................
>>
دل کے بیماریوں کے لئے اصول علاج
...............................
>>
روحانی طبیب کے لئے اصول علاج
...............................
>>
دل کے بیماروں سے خطاب
...............................
>>
روحانی نسخوں کا شہد
...............................
>>
ذکر کی ماہیت
...............................
>>
مشغول کے لئے طریقۂ ذکر
...............................
>>
دل کے بیمار کے لئے چند کام کی باتیں
...............................
>>
دل کے بیماریوں کا تفصیلی علاج
...............................
>>
مرض عصیاں کے لئے دستوں کی دوا
...............................
>>
غذا
...............................
>>
پرہیز
...............................
>>
علامات صحت
...............................
>>
حُب دنیا!
...............................
>>
امراض کے اقسام
...............................
>>
تشخیص میں غلطی
...............................
>>
اسباب مرض
...............................
>>
علاج مرض
...............................
>>
اس نسخہ کا اور ایک جز
...............................
>>
بیعت اور اس کے متعلق امور
...............................
>>
طریق ذکر
...............................
>>
تصور شیخ اور وساوس
...............................
>>
غایت بیعت و مقصود ذکر
...............................
>>
وظائف اور اشغال
...............................
>>

     

All right reserved 2011 - Ziaislamic.com