***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****
 
f1570: بیمار کو نماز میں نیند آئے تو وضو کا حکم <Back
سوال

ہمارے نانا فریش ہیں ، لیٹے ہوئے ہی نماز ادا کرتے ہیں ، ہم لوگ اُنہیں وضو کرواتے ہیں اور وہ لیٹے ہوئے ہی نماز پڑھ لیتے ہیں ، کبھی کبھی اُنہیں لیٹ کر نماز پڑھتے وقت نیند لگ جاتی ہے ، پھر کچھ ہی دیر میں وہ بیدار ہوجاتے ہیں ، تو کیا ہمیں ایسے وقت اُنہیں پھر سے وضو کروانا ہوگا یا نہیں ؟ اس مسئلہ میں رہنمائی فرمادیں تو میں آپ کا شکر گزار رہوں گا۔

جواب

بیمار شخص اگر لیٹ کر نماز ادا کررہا ہواور ایسی حالت اُس پر نیند طاری ہوجائے تو اس کا وضو ٹوٹ جائے گا۔

 

اگر آپ کے نانا کو لیٹے ہوئے نماز پڑھنے کے دوران واقعۃً نیند لگ جائے تو اُن کا وضو باقی نہیں رہے گا، لہذا بیدار ہونے کے بعد اُنہیں دوبارہ وضو کروایا جائے پھر وہ نماز ادا کریں ۔

فتاوی عالمگیری میں ہے : واختلفوا فی المریض اذا کان یصلی مضطجعا فنام فالصحیح ان وضوء ہ ینتقض ھکذا فی المحیط والتبیین والبحر الرائق وعلیہ الفتوی کذا فی النھر الفائق ۔ (فتاوی عالمگیری ، کتاب الطھارۃ،الباب الاول فی الوضوء ، الفصل الخامس فی نواقض الوضوء )

واللہ اعلم بالصواب –

سیدضیاءالدین عفی عنہ

شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ

بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔

www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن

 

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com