***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****
 
f1573: والد کے کاروبار میں بیٹے کے تعاون کا معاوضہ؟ <Back
سوال

میں اپنے والد صاحب کے زیرپرورش تھا اور ایک سال تک میں اپنے والد صاحب کے ساتھ کاروبار میں اُن کی مدد کرتا رہا ، تقریباً چھ مہینے پہلے والد صاحب کا انتقال ہوچکا ہے ، میرے بھائی کاروبار میں کچھ کام نہیں کئے ، اب جائیداد کی تقسیم ہورہی ہے ، کیا کاروبار میں والد صاحب کا ساتھ دینے کی وجہ سے مجھے دوسرے بھائیوں سے زیادہ حصہ مل سکتا ہے ؟

جواب

 آپ اپنے والد صاحب کے زیرپرورش رہتے ہوئے اپنے والد صاحب کے کاروبار میں جو تعاون کیا اُس کا آپ کے لئے عظیم اجر ہے اور دنیا وآخرت میں اس کی برکتیں ملیں گی لیکن اس کی وجہ سے والد صاحب کے انتقال کے بعد ان کے مال متروکہ میں سے آپ کو وراثت میں مقرر کردہ حصہ سے کوئی زائد حصہ نہیں ملے گا ، بلکہ شریعت مطہرہ میں مقررکردہ حصوں کے مطابق اپنے بھائیوں کے برابر حصہ ملے گا۔

ردالمحتار میں ہے : الأب وابنہ یکتسبان فی صنعۃ واحدۃ ولم یکن لہما شیء فالکسب کلہ للأب إن کان الابن فی عیالہ لکونہ معینا لہ ألا تری لو غرس شجرۃ تکون للأب. (رد المحتار،کتاب الشرکۃ ، فصل فی الشرکۃ الفاسدۃ)واللہ اعلم بالصواب

 واللہ اعلم بالصواب –

سیدضیاءالدین عفی عنہ

شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ

بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔

 

www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com