***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > عبادات > نماز کا بیان > اذان کے مسائل

Share |
سرخی : f 1009    اذان میں کھنکارنے کا حکم
مقام : سنتوش نگر,
نام : برہان الدین
سوال:    

ہماری مسجد کے مؤذن صاحب کبھی کبھی اذان میں کھنکارتے ہیں ، کیا اس کی وجہ سے اذان صحیح ہوتی ہے یا نہیں ؟ اذان میں کھنکارنے کے بارے میں کیا حکم ہے ؟ بیان فرمادیں تو میں آپ کا شکر گزار رہوں گا۔


............................................................................
جواب:    

اذان میں بلاعذر کھنکارنا، مکروہ ہے اگر کوئی شخص عذر کی وجہ سے اذان میں کھنکارتا ہوتو کوئی حرج نہیں ۔ فتاوی عالمگیری ، الباب الثانی فی الاذان ، الفصل الاول فی صفتہ واحوال المؤذن میں ہے : ویکرہ التنحنح فی الاذان بغیر عذر فان کان بعذر فلاباس بہ ھکذا فی السراج الوھاج ۔ واللہ اعلم بالصواب ۔ سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ ، بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن۔

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com