***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > معاملات > حلال و حرام کا بیان

Share |
سرخی : f 1132    حرام کاروباروالی کمپنیوں کی ویب سائٹس ڈیزائن کرنا
مقام : بنگلور،انڈیا,
نام : شجاع الدین احمد
سوال:    

میں ایک کمپنی میں ویب ڈیزائنر(web designer)ہوں،اس کمپنی میں مختلف قسم کی سائٹس ڈیزائن کی جاتی ہیں ،جن میں یونیورسٹیوں کے ،اور تجارتی اداروں کی سائٹس ہوتی ہیں ،جتنی کمپنیوں کے آرڈرس آتے ہیں ان میں اکثر حرام کاروبار والی کمپنیاں ہوتی ہیں ،یہ کمپنیاں ویب سائٹ پر اپنے پروڈکٹس کی تشہیر کرتی ہیں ،کیا میں یہ جاب کرسکتا ہوں؟


............................................................................
جواب:    

حرام کاروبار میں کسی بھی قسم کی مدد کرنا ‘ذریعہ بننا شرعا ً ممنوع ہے ،اللہ تعالی نے معصیت وگناہ میں مدد کرنے سے منع فرمایاہے ارشاد خداوندی ہے :وتعاونوا علی البر والتقوی ولاتعاونوا علی الاثم والعدوان ۔ترجمہ:اور تم نیکی کے کام میں ایک دوسرے کی مدد کیا کرو اورتم گناہ اورسرکشی (کے کاموں )میں ایک دوسرے کی مدد مت کرو ۔ (سورۃ المائدۃ۔2) آپ کے بیان کے مطابق آپ کی کمپنی میں حرام کاروبار کرنے والی کمپنیاں ویب سائٹ ڈیزائن کرواتی ہیں جس کے ذریعہ وہ کمپنیاں اپنی مصنوعات (products)کی تشہیر وترویج کرتی ہیں تو اس طرح کی سائٹس کو ڈیزائن کرنا دراصل حرام کام میں ایک قسم کاتعاون ہے جو ازروئے شرع ممنوع ہے، لھذا آپ کااس کمپنی میں ملازمت کرنا درست نہیں،کسی اور کمپنی میں ایسی ملازمت تلاش کریںجوخالص حلال کمائی کاذریعہ ہو۔ البتہ اسی کمپنی میں رہتے ہوئے اگر آپ جائز کاروبار والی کمپنیوںکی یا تعلیمی اداروں کی سائٹس ڈیزائن کریں اور اس طرح کام کریں کہ حرام کاروبار کرنے والی کمپنیوں کے آرڈرس پورے کرنے میں آپ کا کوئی حصہ نہ رہے تویہ ملازمت آپ کیلئے حلال ہے کیونکہ آپ کے کسی عمل سے حرام کام میں تعاون نہیں ہورہا ہے۔ درمختارج5،کتاب الاجارۃ،مطلب فی الاستئجار علی المعاصی،ص38میں ہے:لاتصح الاجارۃ۔ ۔ ۔ لاجل المعاصی مثل الغناء والنوح والملاھی۔ واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com