***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > عبادات > طہارت کا بیان > نجاست کے مسائل

Share |
سرخی : f 1178    بچہ کا پیشاب لگ جائے تو کیا حکم ہے؟
مقام : کانچی،انڈیا,
نام : عادل فہیم
سوال:     چھوٹے بچوں کو گود میں لیتے ہیں تو کبھی بچے پیشاب کردیتے ہیں،اور پیشاب ہمارے ہاتھ پر لگ جاتا ہے،ایسے وقت ہمیں کیا کرنا چاہئیے؟اگر ہم باوضو ہوں تو کیا دوبارہ وضو کرنے کی ضرورت ہے؟
............................................................................
جواب:     بیرون جسم سے کوئی نجاست جسم کو لگ جائے تو اس کی وجہ سے وضو نہیں ٹوٹتا۔ لہذا جسم کے جس حصہ پر بچہ کا پیشاب لگ جائے اس کو پانی سے اچھی طرح دھو ڈالے،دوبارہ وضو کرنے کی ضرورت نہیں۔
ہدایہ، کتاب الطھارات، باب الانجاس وتطہیرھا میں مرقوم ہے: فان اصابھا بول فیبس لم یجز حتی یغسلہ۔
واللہ اعلم بالصواب
سیدضیاءالدین عفی عنہ ،
شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ ،
ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔www.ziaislamic.com
حیدرآباد دکن۔
All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com