***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > اخلاق کا بیان > آداب

Share |
سرخی : f 1205    راہول نام رکھنا کیسا ہے؟
مقام : بہادر پورہ,india,
نام : محمد تاج الدین
سوال:    

ہمارے کرایہ دار کے ایک لڑکے کواس کے گھر والے راہول پکارتے ہیں ، کیا مسلمان یہ نام رکھ سکتے ہے ، اس کا جواب عنایت فرمائیں اور از راہ مہربانی یہ بھی بیان فرمائیں کہ نام کیسے رکھنے چاہئیے اور کونسے نام نہیں رکھنا چاہئیے ؟


............................................................................
جواب:    

ہر شخص کو بحیثیت مسلمان وہی کام کرناچاہئیے جو اللہ تعالی کے پاس محبوب وپسندیدہ ہو ، نام رکھنے میں بھی اسی بات کو ملحوظ رکھنا چاہئیے کہ کونسانام اللہ تعالی کے پاس محبوب وپسندیدہ ہے ۔ زجاجۃ المصابیح ج 4ص 37!38 میں سنن ابوداود کے حوالہ سے حدیث پاک مروی ہے: عن ابی وہب الجشمی قال قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم تسموا باسماء الانبیاء واحب الاسماء الی اللہ عبداللہ وعبدالرحمن واصدقہا حارث وہمام واقبحھا حرب ومرۃ رواہ ابوداود۔ ترجمہ : سید نا ابو وہب جشمی رضی اللہ عنہ سے روایت ہے حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا : انبیاء کے نامو ں پرنام رکھواور اللہ تعالی کے پاس زیادہ پسندیدہ نام عبداللہ او رعبدالرحمن ہیں اور زیادہ صادق آنے والے نام حارث اور ہمام ہیں اور سب سے برے نام حرب اور مرہ ہیں۔ ﴿سنن ابوداود شریف ،باب فی تغیرالاسماء ،حدیث نمبر:4952﴾ اس حدیث شریف سے معلوم ہوتا ہے کہ انبیاء کرام علیھم السلام کے ناموں پر نام رکھنا چاہئیے پھر وہ نام بہتر ہیں جن مین عبدیت کی نسبت اللہ تعالی کی طرف ہو جیسے عبداللہ (اللہ کا بندہ)عبدالرحمن (رحمن کا بندہ ) عبدالرحیم (رحیم کا بندہ) اس کے علاوہ کوئی بھی ایسا نام رکھیں جس کے معنی اچھے ہوں او رایسے نام نہ رکھے جائیں جس کے معنی برے ہوں ۔ آدمی کا جو نا م ہوتا ہے قیامت کے دن اسے اسی نام سے پکار ا جائیگا جیسا کہ زجاجۃ المصابیح ج 4ص 37 میں حدیث پاک ہے عن ابی الدرداء قال قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم تدعون یوم القیامۃ باسمائکم واسماء ابائکم فاحسنوا اسمائکم رواہ احمدوابوداود ۔ ترجمہ: سیدنا ابوالدرداء رضی اللہ عنہ سے روایت ہے حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا :تمہیں قیامت کے دن تمہارے ناموں سے او رتمہارے پاب کے ناموں سے بلایا جائے گا لہذا تم اپنے نام اچھے رکھو۔ ﴿سنن ابوداود شریف ،باب فی تغیرالاسماء ،حدیث نمبر:4950 ۔مسند احمد ،حدیث نمبر:21739 ﴾ ’’راہول‘‘ غیراسلامی نام ہے جو درست نہیں ہے،اس طرح کے ناموں سے احتراز کرنا چاہئیے ،لڑکے کے والدین یا سرپرست حضرات کو چاہئیے کہ لڑکے کا نام تبدیل کردیں اورمذکورہ تفصیل کے مطابق کوئی اچھا نام رکھیں۔ واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com