***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > عبادات > طہارت کا بیان > وضو کے مسائل

Share |
سرخی : f 1352    کیا بیٹھ کر سونا وضوکو توڑدیتا ہے ؟
مقام : سنگاریڈی ,india,
نام : نوید خان
سوال:     جمعہ کے دن جب خطیب صاحب منبر پر ٹہرکر خطبہ دیتے ہیں بعض لوگ اونگھتے ہیں اور کسی کوبیٹھے بیٹھے نیند بھی لگ جاتی ہے ،کیا اسکی وجہ سے دوبارہ وضوکرناہوگا؟
............................................................................
جواب:     نیندوضو کوتوڑدیتی ہے لیکن کوئی شخص بیٹھ کر یا کھڑے ہوکر سوجائے تووضونہیں ٹوٹتا،ہاں اگر کسی چیزکوٹیک لگاکر بیٹھے اور نیندآ جائے,اگر اس چیزکوہٹادیا جائے تو سونے والاگرجاتا ہو تو ایسی صورت میں وضوٹوٹ جائیگا۔
جمعہ کے دن جس کو مسجدمیں اونگھ یا نیند آجائے ایسے شخص کے لئے حضوراکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے سستی اور اونگھ کو دور کرنے کا طریقہ سکھاتے ہوئے فرمایا: اس کو چاہئیے کہ وہ  اپنی جگہ سے اٹھ کر دوسری جگہ بیٹھ جائے،جیسا کہ جامع ترمذی شریف ج 1ص 118میں حدیث پاک ہے :
عن ابن عمر عن النبی صلی اللہ علیہ وسلم قال اذا نعس احدکم یوم الجمعۃ فلیتحول من مجلسہ ذلک ۔ ترجمہ :سیدناعبداللہ بن عمر رضی اللہ عنہما حضرت نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے روایت کرتے ہیں آپ نے ارشاد فرمایا جب تم میں سے کسی کو جمعہ کے دن اونگھ آئے تو چاہئیے کہ وہ اپنی نشست تبدیل کردے ۔
واللہ اعلم بالصواب
سیدضیاءالدین عفی عنہ ،
شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ ،
بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔
حیدرآباد دکن۔
All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com