***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > اخلاق کا بیان > والدین کے حقوق

Share |
سرخی : f 1462    والدین کی نافرمانی ،عظیم گناہ
مقام : غازی بنڈہ ,
نام : محسن علی
سوال:    

ہمارے محلہ میں ایک لڑکا ہے جواپنے والدین کی نافرمانی کرتا ہے اور ان کے ساتھ ٹھیک طور پیش نہیں آتا،ان سے بد سلوکی کرتاہے ، اس لڑکے کے لئے کچھ نصیحت فرمائیں ؟


............................................................................
جواب:    

والدین کی نافرمانی نہایت عظیم گناہ ہے ‘اس کی سزادنیا میں بھی ملتی ہے جیسا کہ الترغیب والترھیب کتاب البر والصلۃج3ص522 میں ہے ’’عن ابی بکرۃ رضی اللہ عنہ عن النبی صلی اللہ علیہ وسلم کل الذنوب یوخراللہ منھا ماشاء الی یوم القیامۃ الاعقوق الوالدین فأن اللہ یعجلہ لصاحبہ فی الحیوۃ قبل الممات ‘‘ ترجمہ : حضرت ابوبکرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضرت نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا :تمام گنا ہوں میں سے اللہ تعالیٰ جس کو چاہتا ہے قیامت تک موخر فرماتا ہے سوائے والدین کی نافرمانی کے ،اللہ تعالی اس شخص کومو ت سے پہلے زندگی میں ہی اس کی سزادیتاہے۔ والدین کے اولاد پر اس قدر احسانات ہوتے ہیں کہ اگر اولاد اپنا سب کچھ صرف کردے تب بھی یہ ان عظیم احسانات وعنایات کا بدلہ نہیں ہوسکتا ، لہذا سعادت مند اولاد کافریضہ یہ ہے کہ وہ والدین کی خدمت کرے اور ان سے حسن سلوک کو اپنا شعار بنا لے اور اپنے والدین کے ساتھ بد سلوکی پر ان سے معافی مانگے کیونکہ نیک برتاؤ اور حسن سلوک کے حقدار سب سے پہلے والدین ہیں، بخاری شریف ج2ص388میں حدیث پاک ہے:’’ عن ابی ہریرۃ قال جاء رجل الی رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم فقال یا رسول اللہ من احق بحسن صحابتی؟ قال امک قال ثم من قال امک قال ثم من قال امک قال ثم من قال ابوک ‘‘ ترجمہ :حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں کہ ایک شخص حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی خدمت اقدس میں حاضر ہوکر عرض کیا :یارسول اللہ میر ے اچھے برتاؤ کا زیادہ حقدار کون ہے ؟توحضور پاک صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: تمہاری ماں ،عرض کیا پھر کون؟ فرمایا تمہاری ماں، عرض کیا پھرکون؟ فرمایا تمہاری ماں ، عرض کیا پھر کون ؟ فرمایا تمہارے والد۔ واللہ اعلم بالصواب سید ضیاء الدین عفی عنہ شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ وبانی ابوالحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر www.ziaislamic.com حیدرآباد ، دکن ،انڈیا

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com