***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > عبادات > طہارت کا بیان > غسل کے مسائل

Share |
سرخی : f 1506    بغیرطہارت کے قرآن کی آیت پڑھنا
مقام : دبئی,
نام : عبداللہ
سوال:    

کیا بغیر طہارت کے کوئی سورہ یا کونسی بھی قرآن کی آیت پڑھ سکتے ہیں ؟


............................................................................
جواب:    

شریعت مطہرہ کی روسے بحالت جنابت کوئی شخص قرآن مجید کی تلاوت نہیں کرسکتا، جیسا کہ سنن ترمذی شریف ج ۱ ص ۳۴ میں حدیث شریف ہے : عن ابن عمر عن النبی صلی اللہ علیہ وسلم قال لاتقرأ الحائض ولاالجنب شیئا من القراٰن۔ ترجمہ: حضرت عبداللہ بن عمررضی اللہ عنہما حضرت نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے روایت کرتے ہیں آپ نے ارشادفرمایا: حائضہ اور جنبی قرآن مجید کی تلاوت نہ کرے۔ البتہ جنابت کی حالت میں اوراد‘ دعائیں او راذکار پڑھنے میں کوئی حرج وممانعت نہیں ہے شرح وقایہ ج۱ ص ۱۱۶میں ہے وسائرالادعیۃ والاذکار لاباس بھا۔ ترجمہ : تمام قسم کے اوراد‘ دعائیں اور اذکار پڑھنے میں کوئی حرج نہیں ہے۔ فتاوی عالمگیری ج ۱کتاب الطہارۃ الفصل الرابع فی احکام الحیض والنفاس والا ستحاضۃ ص ۳۸ میں ہے ویجوزللجنب و الحائض الدعوات وجواب الاذان ونحوذلک۔ ترجمہ:جنبی اورحائضہ کیلئے دعائیں پڑھنا اوراذان کا جواب دینا اور اس جیسے اذکار پڑھنا جائز ہے۔ ہاں ان کے حق میں مستحب ومندوب ہے کہ وہ اذکار ‘اوراد اور کلمہ طیبہ وغیرہ پڑھنے کے وقت وضو کرلیں ۔ درمختار برحاشیہ رد المحتار ج ۱ص ۱۲۲میں ہے: (ولایکرہ النظرالیہ )ای القرآن (لجنب وحائض ونفساء ) لان الجنابۃ لاتحل العین (ک)مالا تکرہ (ادعیۃ )ای تحریما والا فالوضوء لمطلق الذکر مندوب وترکہ خلاف الاولی وہومرجع الکراہۃ التنزیہیۃ۔ ترجمہ:جنبی وحیض ونفاس والی عورت کیلئے قرآن مجید کودیکھنے میں کوئی کراہت نہیں کیونکہ جنابت وناپاکی آنکھ میں سرایت نہیں کرتی ونیزدعاؤں کا پڑھنا مکروہ تحریمی نہیں ہے البتہ مطلق ذکر کیلئے وضو کرلینا مستحب ہے اور بے وضوپڑھنا خلاف اولی اور مکروہ تنزیہی ہے ۔ واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com