***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > عبادات > نماز کا بیان > مسافر کی نماز کے مسائل

Share |
سرخی : f 20    مسافرامام کی اقتداء …مقیم کیلئے
مقام : امريكه,
نام : عبدالمقیت
سوال:    

مسافر امام چاررکعت والی نمازمیں جب دو رکعات کے بعد سلام پھیردے گا توبقیہ دو رکعتوں میں مقتدی کیا پڑھے؟


............................................................................
جواب:    

شرعی مسافر کے لئے چار رکعات والی فرض نمازوں میں قصرکرنے کا حکم ہے ، اگر مسافر چاررکعات والی نمازمیں امامت کرے تو وہ دو رکعات کے بعد سلام پھیردے گا اور جومسافر مقتدی ہیں وہ بھی امام کے ساتھ سلام پھیردیں گے ، اور اس کی اقتداء کرنے والے مقیم مقتدی حضرات جنہیں قصر کا حکم نہیں ہے کھڑے ہوکر مابقی دو رکعات مکمل کرلیں ،یہ دورکعتیں چونکہ فرض کی تیسری اور چوتھی رکعات ہیں لہذا ان دونوں رکعتوں میں قراءت نہ کریں بلکہ سورہ فاتحہ پڑھنے کے بقدرخاموش کھڑے رہیں ،اسلئے کہ وہ لاحق کے حکم میں ہیں ۔ ایسی صورت میں مسافر امام کے لئے مستحب ہے کہ وہ سلام کے بعد اعلان کردے کہ تم اپنی نماز کومکمل کرلو کیونکہ میں مسافر ہوں ، تاکہ امام کی نسبت سہو کا وہم دور ہوجائے۔ فتاوی عالمگیری ج 1، ص85، میں ہے : ويصح اقتداء المقيم بالمسافر فی الوقت وخارج الوقت ۔ درمختار علی ھامش ردالمحتار ج 1،ص584، میں ہے : ( وَصَحَّ اقْتِدَاءُ الْمُقِيمِ بِالْمُسَافِرِ فِي الْوَقْتِ وَبَعْدَهُ فَإِذَا قَامَ ) الْمُقِيمُ ( إلَى الْإِتْمَامِ لَا يَقْرَأُ ) وَلَا يَسْجُدُ لِلسَّهْوِ ( فِي الْأَصَحِّ ) لِأَنَّهُ كَاللَّاحِقِ وَالْقَعْدَتَانِ فَرْضٌ عَلَيْهِ وَقِيلَ لَا قُنْيَةٌ ( وَنُدِبَ لِلْإِمَامِ ) … ( أَنْ يَقُولَ ) بَعْدَ التَّسْلِيمَتَيْنِ فِي الْأَصَحِّ ( { أَتِمُّوا صَلَاتَكُمْ فَإِنِّي مُسَافِرٌ } ) لِدَفْعِ تَوَهُّمِ أَنَّهُ سَهَا ۔ واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن۔

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com