***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > معاملات > قربانی کا بیان > قربانی کے جانور

Share |
سرخی : f 286    وہ کونسے جانور ہیں جن کی قربانی درست نہیں؟
مقام : انڈیا,
نام : تبسم فاطمہ
سوال:    

مفتی صاحب میں یہ جاننا چاہتاہوں کہ وہ کونسے جانور ہیں جن کی قربانی عیب ہونے کی بناء صحیح نہیں ہوتی ؟اجمالا ذکرفرمائیں تو مہربانی وکرم ہوگا۔


............................................................................
جواب:    

قربانی کے ذریعہ بندہ اللہ تعالی کی بارگاہ میں قرب حاصل کرتا ہے لہذاقربانی کے لئے ایسے جانور کا انتخاب کرنا چاہئے جو فربہ ،صحیح وسالم ہو ، اندھا، لنگڑا ، بیمار،کمزور نہ ہو۔ مندرجہ ذیل عیب والے جانوروں کی قربانی درست نہیں:اندھا، کانا، لنگڑا، بہت دبلاجو قربان گاہ تک نہ چل سکے، تہائی سے زیادہ کان یا دم یا سرین کٹاہوا، تہائی سے زیادہ جس کی بینائی جاتی رہی ہو، بے دانت ،اوروہ جانور جس کی سینگیں جڑسے ٹوٹ گئی ہوں، البتہ ماں پیٹ سے جن کی سینگ نہ ہوں ان کی قربانی درست ہے۔ مسند امام احمد بن حنبل، مسند البراء بن عازب میں حدیث مبارک ہے (حدیث نمبر :18200) عن البراء بن عازب ان رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سئل ماذا یتقی من الضحایا فقال اربع، وقال البراء وید ی اقصرمن ید رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم العرجاء البین ظلعھا والعوراء البین عورھا والمریضۃ البین مرضھا والعجفاء التی لاتنقی ۔ ترجمہ :سیدنا براء بن عازب رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے دریافت کیا گیا کہ کن جانور وں کی قربانی نہیں کرنا چاہئے توآپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا :چار:حضرت براء بن عازب رضی اللہ عنہ نے فرمایا اور میرا ہاتھ رسول پاک صلی اللہ علیہ وسلم کے دست مبارک سے چھوٹا وکمترہے :(1)ایسالنگڑا جانور جس کا لنگڑا ہونا ظاہر ہو،(2)کاناجس کاکانا ہونا واضح ہو،(3)بیمار جس کا مرض ظاہر ہو(4) ایسا کمزو رولاغر جس کی ہڈیوں میں گود نہ ہو۔نیزیہ روایت سنن کبری للبیہقی میں بھی مذکورہے (حدیث نمبر : 19632) واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن۔

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com