***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > اخلاق کا بیان > والدین کے حقوق

Share |
سرخی : f 52    حالت غصہ میں والد کی بدعاء!
مقام : جدہ,
نام : سلیم
سوال:    

کیا والد جو اکثر معمولی تاخیر یا کسی کام کے کرنے میں تھوڑا سا بھی ادھر ادھر ہوجا‏ئے تو غصہ میں بڑی بڑی بدعائیں دیتے ہیں- کیا یہ واقعی ہوجاتی ہے ؟ اور خود والد کبھی بعد میں یہ یاد نہیں رکھتے یا کہتے ہیں ارے کوئی بات نہیں-


............................................................................
جواب:    

والدین اللہ تعالی کی عظیم نعمت ہیں ،انکی قدردانی ، اطاعت و فرمابرداری لازم و ضروری ہے،انکی دل آزاری سے بچتے رہنا چاہئے کیونکہ حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد مبارک ہے :اولاد کے خلاف ان کے والد کی دعا رد نہیں کی جاتی جیسا کہ جامع ترمذی شریف میں حدیث پاک ہے : عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ ثَلَاثُ دَعَوَاتٍ مُسْتَجَابَاتٌ لَا شَكَّ فِيهِنَّ دَعْوَةُ الْمَظْلُومِ وَدَعْوَةُ الْمُسَافِرِ وَدَعْوَةُ الْوَالِدِ عَلَى وَلَدِهِ – ترجمہ:سیدنا ابو ھریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے ،آپ نے فرمایا کہ حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا:تین ایسی دعائیں ہیں جس کی قبولیت میں کوئی شک نہیں! مظلوم کی دعاء،مسافر کی دعاء اور والد کی دعاء اپنی اولاد کے خلاف – (جامع ترمذي, البر والصلة عن رسول الله صلى الله عليه وسلم, باب ما جاء في دعوة الوالدين, حدیث نمبر:1828) البتہ اگر کسی صاحب کو غصہ کی عادت ہے اور ڈانٹ ڈپٹ کرنے سے صرف تادیب اور اظھار غصہ مقصود ہو توان شاء اللہ وہ اس میں شامل نہیں ہوگی – آپ کے والد صاحب حالت غصہ میں ڈانٹتے اور بد دعاء کرتے ہیں پھر غصہ ختم ہونے کے بعد خود کہتے ہیں :کوئی بات نہیں!اس لئے یہ آپ کے حق میں ان شاء اللہ بد دعاء نہیں ہے محض غصہ کا اظھار ہے اور ڈانٹنے کا انداز ہے،بہر حال آپ فرزند ہونے کی حیثیت سے اپنے والدکی عزت کریں اور ان کی فرمابرداری میں کوتاہی نہ کریں- والدین کو چاہئیے کہ اپنی اولاد کی کوتاہیوں پر انہیں نصیحت کریں ، انکی ہلاکت کے لئے دعاء نہ کریں بلکہ ان کے لئے حسن ادب کی توفیق کی دعاء کریں - واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ ، بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ حیدرآباد دکن۔

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com