***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > معاملات > اجرت(کرایہ) کا بیان

Share |
سرخی : f 552    کرایہ نہ دینے کی صورت میں کیا کریں ؟
مقام : سعودیہ عربیہ,
نام : سید خواجہ محی الدین
سوال:    

السلام علیکم مولانا صاحب میرا نام خواجہ ہے ، میرا ایک سوال ہے پلیس اس کا جواب دیجئے ۔ میں پہلے رمضان میں عمرہ کے لئے گیا تھا ، جب میں مکہ میں تھا تب میں ایک ٹکسی میں مسجد عائشہ گیا تھا اور وہی ٹکسی میں مکہ کو واپس آگیا، پھر وہ ٹکسی والا بجائے 40 یا 50 ریال کے بجائے 120 ریال مانگنے لگا، تب میں بولا کہ اتنے نہیں دے سکتا، تب وہ مجھے پورے پیسے دے دو بولا ،تب میں ابھی آتا ہوں کہ کر بھاگ آیا اور اسکو ایک پیسہ بھی نہیں دیا ، اب مجھے دُکھ ہورہا ہے، اب میں کیا کروں ؟ اللہ سے معافی کیسے مانگوں ؟ پلیس مجھے بتائے ۔جزاک اللہ، اللہ حافظ ۔


............................................................................
جواب:    

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاتہ ، اگر کسی طریقہ سے آپ اُس ڈرائیور تک رقم پہنچاسکتے ہیں تو ضرور پہنچائیں ،اس میں کوتاہی نہ کریں ،اگر یہ ممکن نہ ہوتو اُس رقم کو انکی طرف سے صدقہ کردیں ،پھر اگر کسی وقت اُن سے ملاقات ہوجائے یا پتہ مل جائے تو اُنہیں رقم لوٹانا آپ کے لئے ضروری ہے۔آپ نے اُنہیں جو رقم نہیں دی یہ حقوق العباد سے ہے جسے ادانہ کرنا گناہ کبیرہ ہے ، آپ اللہ تعالی کی بارگاہ میں توبہ واستغفار کریں ، نیز اُن صاحب کی تلاش جاری رکھیں ۔ واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ،شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com