***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > عبادات > طہارت کا بیان > وضو کے مسائل

Share |
سرخی : f 678    کیا خون پٹی میں آنے سے وضو ٹوٹ جائیگا ؟
مقام : نامپلی،انڈیا,
نام : منیر الدین
سوال:     مفتی صاحب ! آپ کے جوابات مدلل اطمینان بخش ہوتے ہیں۔ آپ کے جوابات سے میرے کئی اشکال دور ہوئے ہیں ۔ میں آپ سے ایک اور الجھن دور کرنے کی درخواست کرتا ہوں ۔ میں ایک ایکسیڈنٹ میں تھوڑا سا زخمی ہوگیا تھا۔ الحمدللہ اب تو زخم بھرچکا ہے لیکن اس وقت پٹی باندھنے کے بعد زخم کے اوپر پٹی کا حصہ خون سے لال ہوگیا تھا ۔ اس وقت سے یہ بات میرے ذہن میں کھٹک رہی ہے کہ کیااس کی وجہ سے میرا وضو باقی رہا یا ٹوٹ گیا ؟ براہ کرم میری اس الجھن کو دور فرمائیں ۔
............................................................................
جواب:     خون جسم سے نکل کر اپنی جگہ سے بہہ جائے تو وضو ٹوٹ جاتا ہے۔اگر زخم پر پٹی باندھی ہوئی ہو تو فقہائے کرام نے احادیث شریفہ کی روشنی میں اس کا حکم یہ بیان فرمایا کہ اگر زخم سے خون اتنی مقدار میں نکلے کہ پٹی میں سرایت کرکے اس کو ترکردے تو وضوٹوٹ جاتا ہے۔ کیونکہ اتنی مقدارمیں نکلنے والا خون بہنے والے کے حکم میں ہے۔ زخم سے نکلنے والا خون اتنی قلیل مقدارمیں ہو کہ اگر پٹی میں سرایت نہیں کیا تو اس سے وضو نہیں ٹوٹے گا۔  
ردالمحتار ج 1ص 103میں ہے :ولو القی علی الجرح الرماد اوالتراب فتشرب فیہ اوربط علیہ الرباط فابتلالرباط و نفذ قالوا یکون حدثالانہ سائل وکذا لو کان الرباط ذا طاقین فنفذ الی احدھما لما قلنا ۔
تقریر رافعی ج 1ص 19 میں ہے: (قولہ فابتل الرباط و نفذ ) ولو لم ینفذ من الرباط لا ینقص۔ ترجمہ : اگر زخم پر راکھ یامٹی ڈالی گئی اور خون اس میں داخل ہوجائے یا اس پرپٹی باندھی گئی تو خون کی وجہ سے پٹی تر ہوگئی اور خون اس میں سرایت کرگیا تو فقہاے کرام نے اس کو حدث اور ناقض وضو قرار دیا ہے ۔اس لئے کہ  وہ بہنے والا خون کہلاتا ہے ۔ اسی طرح اگر پٹی گھیرے والی ہو اور خون ایک گھیرے میں سرایت کرگیا تو ناقض وضو ہے ۔اگر خون پٹی میں سرایت ہی نہیں کیا تو ناقض وضو نہیں۔  
آپ نے سوال میں جو ذکر کیاکہ زخم کے اوپر پٹی کا حصہ خون سے سرخ ہوگیا یعنی پٹی خون سے تر ہوچکی ۔ مذکورہ بالا تفصیل کے مطابق خواہ وہ پٹی دوہری ہو یا اکہری جب وہ خون سے تر ہوکر سرخ ہوچکی تو اس کی وجہ سے وضو ٹوٹ جاتا ہے ۔  
واللہ اعلم بالصواب –
سیدضیاءالدین عفی عنہ ،
شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ ،
بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ www.ziaislamic.com
حیدرآباد دکن۔
31-07-2010
All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com