***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > معاشرت > نکاح کا بیان > نفقہ کے مسائل

Share |
سرخی : f 680    بیوی میکہ میں ہو تو خرچ کس کے ذمہ ہوگا؟
مقام : دبئ ، امارات,
نام : محمدعبدالستار
سوال:    

اگر بیوی ماں باپ کے گھر میں رہے تو اس کا خرچہ ماں باپ پر ہوگا یا شوہر کے ذمہ رہے گا؟


............................................................................
جواب:    

بیوی شوہر کی اجازت سے ماں باپ کے گھر گئی ہے تو شوہر پر بیوی کا نفقہ واجب ہے اور اگر بیوی بغیر کسی شرعی وجہ کے اپنے شوہر کی رضامندی حاصل کئے بغیر اپنے والدین کے پاس رہے تو شوہر کے ذمہ اس کا نفقہ واجب نہیں ہے ۔ درمختار باب النفقہ میں ہے ۔ فتجب للزوجة علي زوجها (ولوهي فی بيت ابيها اذا لم يطالبها زوج بالنقلة به يفتي ۔ اسي باب ميں ہے ۔ (وخارجة من بيته بغير حق ) وهي الناشزة حتي تعود ۔ واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ ، بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن۔

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com