***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > معاملات > قربانی کا بیان

Share |
سرخی : f 785    قادیانی سے قربانی کا گوشت لینا؟
مقام : ,
نام :
سوال:    

قادیانی لوگ قربانی کا گوشت دیتے ہیں ،کیا اُسے کھانا صحیح ہے ؟ اور ہم اپنی قربانی کا گوشت قادیانیوں کو دے سکتے ہیں ؟ قرآن وحدیث کی روشنی میں جواب عنایت فرمائیں ۔


............................................................................
جواب:    

حضو رنبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی ذات مقدسہ سے متعلق ختم نبوت کا عقیدہ کہ آپ ہی آخری نبی ہیں آپ کے بعد کوئی نبی ورسول آنے والا نہیں ہے۔ یہ اسلام کے بنیادی عقائد میں سے ہے جوقرآن مجید اوراحادیث شریفہ کے عبارت النص اوراجماع امت سے ثابت ہے، جس کا انکار کرنا یا اسمیں کسی قسم کی کوئی تاویل کرنا صریح کفر ہے، اللہ تعالی نے اپنے کلام مقدس میں ارشاد فرمایا:مَا کَانَ مُحَمَّدٌ أَبَا أَحَدٍ مِنْ رِجَالِکُمْ وَلَکِنْ رَسُوْلَ اللَّہِ وَخَاتَمَ النَّبِیِّینَ ۔ ترجمہ:محمد صلی اللہ علیہ وسلم تمہا رے مَردوں میں سے کسی کے والد نہیں لیکن وہ اللہ کے رسول ہیںاورسب انبیاء کے سلسلہ نبوت کوختم کرنے والے ہیں۔(سورۃالاحزاب ۔40) کتب صحاح وسنن ،معاجم ومسانید میں اس مضمون کی متعدد احادیث شریفہ موجودہیں جوتواتر معنوی کادرجہ رکھتی ہیں‘ بطورنمونہ صحیح بخاری شریف اورجامع ترمذی شریف سے روایت ذکرکیجاتی ہے ، صحیح بخاری شریف ج2ص633پرایک طویل حدیث شریف میں حضور صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد مبارک ہے :الاانہ لیس نبی بعدی ۔ترجمہ:مگریہ کہ میرے بعد کسی بھی قسم کا کوئی نبی نہیں آسکتا۔(صحیح بخاری شریف ، ج2،کتاب المغازی ،باب غزوۃ تبوک وھی غزوۃ العسرۃ،ص633،حدیث نمبر:4154)جامع ترمذی شریف میں حدیث پاک ہے:قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ان الرسالۃ والنبوۃ قدانقطعت فلا رسول بعدی ولانبی ۔ ترجمہ:حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا:بیشک رسالت ونبوت بالیقین منقطع ہوچکی ہے میرے بعد نہ کوئی نبی ہوسکتا ہے اورنہ کوئی رسول۔(جامع ترمذی شریف ج2،ابواب الرؤیا،باب ذھبت النبوۃ وبقی المبشرات،ص53،حدیث نمبر:2441)فتاوی عالمگیری ج2،ص263 میں ہے: اذالم یعرف الرجل ان محمد اصلی اللہ علیہ وسلم آخرالانبیاء علیہم وعلی نبینا السلام فلیس بمسلم کذا فی الیتیمۃ۔ ترجمہ:اگرکوئی شخص یہ عقیدہ نہ رکھے کہ حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم آخری نبی ہیں تو وہ مسلمان ہی نہیں۔ نصوص بالا کی روشنی میں عرب وعجم ،شرق وغرب شمال وجنوب کے جملہ علماء اسلام نے بالاتفاق مرزاقادیانی اور اس کے متبعین کو خارج عن الاسلام اورکافرقراردیاہے۔لہذا مرزا غلام احمد قادیانی کے پیروکار جو ’’قادیانی‘‘ کہلاتے ہیں وہ مسلمان نہیں جبکہ ذبح کے شرائط میں ذبح کرنے والے کا مسلمان ہونابھی ایک شرط ہے ، اگر ذبح کرنے والاغیرمسلم ‘مشرک یا مرتد ہوتو ذبیحہ حلال نہیں ہوتا،بنابریں قادیانیوں کا ذبیحہ حرام ہے ، ان کی قربانی شرعاًقربانی ہے اور نہ ان کا ذبیحہ شرعاً ذبیحہ ہے اس کا گوشت کھاناشرعاً جائز نہیں ، اسی طرح مسلمانوں کے لئے جائز نہیں کہ قادیانیوں کو قربانی کاگوشت دیں۔فتاوی عالمگیری ،کتاب الذبائح ،الباب الاول فی رکنہ وشرائطہ وحکمہ وانواعہ میں ہے: ( ومنہا ) أن یکون مسلما أو کتابیا فلا تؤکل ذبیحۃ أہل الشرک والمرتد ؛ لأنہ لا یقر علی الدین الذی انتقل إلیہ۔ واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، نائب شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن۔ 18-11-2010

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com