***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > عبادات > حج وعمره کا بیان > طواف کے مسائل

Share |
سرخی : f 798    جدہ کے باشندہ کے لئے طوافِ وداع نہیں
مقام : جدہ,
نام : محمد عبد الحفیظ
سوال:     میں جدہ میں مقیم ہوں‘ میں نے اس سال حج کی سعادت حاصل کی ہے ، میں نے مناسک حج ادا کئے لیکن طواف صدر کرنا بھول گیا‘ اب میں جدہ واپس ہوچکا ہوں، اگر میں ایک دو دن میں مکہ مکرمہ جاکر طواف کرلوں تو کیا میری جانب سے طواف وداع ادا ہوجائے گا یا دم دینا ہوگا؟ میں اس معاملہ میں بہت فکرمند ہوں برائے مہربانی جلد از جلد جواب دیں۔ جزاک اللہ خیرا۔  
............................................................................
جواب:     طوافِ وداع آفاقی کے لئے واجب ہے، خواہ وہ حج افراد کرنے والا ہو، خواہ تمتع یا قران کررہاہو، مکہ کے باشندگان یا میقات کے اندر رہنے والوں کے لئے واجب نہیں ۔ تاہم علامہ ابن عابدین شامی رحمۃ اللہ علیہ نے رد المحتار میں اس کے مستحب ہونے کا تذکرہ کیا ہے ۔
چونکہ آپ جدہ میں مقیم ہیں اور جدہ میقات کے اندر آتا ہے لہذا آپ پر طواف وداع واجب نہیں، بنابریں طواف وداع نہ کرنے کی وجہ سے آپ کودم دینا لازم نہیں۔
المسلک المتقسط فی المنسک المتوسط للملا علی القاری، باب طواف الصدر ص279 میں ہے: (ھو واجب علی الحاج الافاقی) ای دون المکی والمیقاتی۔
واللہ اعلم بالصواب –
سیدضیاءالدین عفی عنہ ،
شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ
بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ www.ziaislamic.com
حیدرآباد دکن۔

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com