***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > عقائد کا بیان > متفرق مسائل

Share |
سرخی : f 832    بیعت سے مراد کیا ہے؟
مقام : ,
نام : محمد عبد السبحان
سوال:    

میں نے سنا کہ جس کا شیخ نہ ہو اسکا شیخ شیطان ہوتا ہے ، یہ روایت کہاں ہے ؟


............................................................................
جواب:    

؛ اللہ تبارک وتعالی کا ارشاد ہے :" إِنَّ الَّذِينَ يُبَايِعُونَكَ إِنَّمَا يُبَايِعُونَ اللَّهَ يَدُ اللَّهِ فَوْقَ أَيْدِيهِمْ " یعنی اے نبی! جو لوگ آپ کے دست اقدس پر بیعت کرتے ہیں دراصل وہ اللہ ہی سے بعیت کرتے ہیں ،انکے ہاتھوں پر اللہ کا ہاتھ ہے۔ (سورۃ الفتح:10) حضرات صحابہ کرام رضی اللہ عنہم نے بھی مختلف امور میں حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے بیعت کی ہے ۔ الحمد للہ وہی سلسلہ اب تک جاری ہے ۔ بیعت کا مقصد بصدق دل توبہ کرنا اور اللہ تعالی کے ذکر کا طریقہ معلوم کرکے یادِ الہی میں مصروف ہوجانا ہے ۔ ایسی کوئی روایت ذخائز حدیث میں نظر سے نہیں گزری ، البتہ امام شعرانی نے لکھا ہے ؛ فان من لاشیخ لہ فشیخہ الشیطان ۔ ترجمہ ؛ جس شخص کا کوئی شیخ نہ ہو اس کا شیخ شیطان ہے ۔ ﴿لواقح الانوارالقدسیة فی بیان العھود المحمدیہ ، قسم المناھی﴾ واللہ اعلم بالصواب سید ضیاء الدین عفی عنہ شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ وبانی ابوالحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر www.ziaislamic.com حیدرآباد ، دکن ،انڈیا

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com