***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > عبادات > نماز کا بیان > سجدۂ سہو کے مسائل

Share |
سرخی : f 893    پہلے قعدہ میں تشہد کی تکرار کاحکم
مقام : ہانکانگ,
نام : شبیرمحمد
سوال:     مجھ سے ایک صاحب نے نماز کے بارے میں سوال کیا کہ کوئی شخص چار رکعات والی نماز پڑھ رہا ہو اور پہلے قعدہ میں تشہد پڑھنے کے بعد غلطی سے پھر تشہد پڑھ لیا ، تو کیا اس کی وجہ سے اسکو سجدۂ سہو کرنا ضروری ہے ؟
............................................................................
جواب:     چار رکعات والی نماز کے قعدۂ اولی میں تشہد کے بعد قیام کرنا،فرض ہے ، اس میں تاخیر در اصل رکن نماز کی ادائیگی میں تاخیر ہے جس کی وجہ سے سجدہ سہو لازم آتا ہے ، لہذا اگر کوئی شخص قعدۂ اولی میں تشہد پڑھ چکا اور بھول کر دوبارہ تشہد پڑھ لے تو ایسی صورت میں تکرار واجب اور تاخیر رکن کی وجہ سے سجدۂ سہو واجب ہے۔  
فتاوی عالمگیری ، کتاب الصلوٰۃ ، الباب الثانی عشر فی سجود السھو میں ہے : ولوکرر التشھد فی القعدۃ الاولی فعلیہ السھو۔
  واللہ اعلم بالصواب ۔
سیدضیاءالدین عفی عنہ ،
شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ ،
بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ www.ziaislamic.com
حیدرآباد دکن۔
All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com