***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > عبادات > طہارت کا بیان > پانی کے مسائل

Share |
سرخی : f 895    بچہ برتن میں ہاتھ ڈال دے تو پانی کا کیا حکم ہے ؟
مقام : بنگلور،انڈیا,
نام : ملکہ بیگم
سوال:    

میرے دو لڑکے ہیں ، بڑا لڑکا چارسال کا ہے ، وہ اسکول جاتاہے ، چھوٹا لڑکا دوسال کا ہے ، میں اپنے شوہر کے ساتھ رہتی ہوں ، میرے شوہر جب آفس جاتے ہیں تو میں اپنے چھوٹے لڑکے کے ساتھ گھر میں رہتی ہوں ، دن میں بڑا لڑکا تو اسکول میں رہتاہے ، میں کام کاج میں مصروف رہتی ہوں بعض اوقات چھوٹا لڑکا پانی کے برتن میں ہاتھ ڈال دیتاہے ، کیا میں اس پانی سے وضو کرسکتی ہوں؟ میرے چھوٹے لڑکے کانام صادق ہے ، اس کے کیا معنٰی ہے ؟ کیا یہ نام صحیح ہے؟ میرے سوال کا جواب دیں تو مہربانی ہوگی ۔


............................................................................
جواب:    

بچہ اگر پانی کے برتن میں ہاتھ ڈال دے تو اس کے بارے میں دیکھاجائے گا کہ بچہ کے ہاتھ پر نجاست تھی یا نہیں؟ اگر یہ بات یقینی طور پر معلوم ہو کہ بچہ کا ہاتھ پاک تھا ، کوئی ناپاکی لگی ہوئی نہیں تھی تو اس پانی سے وضو کرنا،شرعاً جائز ہے اور اگر یہ معلوم نہ ہو کہ ہاتھ پاک تھا یا ناپاک، تو ایسی صورت میں مستحب ہے کہ اس پانی کے بجائے دوسرے پانی سے وضو کیا جائے ، اس کے باوجود اگر اس برتن کے پانی سے وضو کرلیا جائے جس میں بچہ ہاتھ ڈالا تھا تو وضو درست ہوجاتا ہے۔ فتاوی عالمگیری ، کتاب الطھارۃ ، الباب الثالث فی المیاہ ، الفصل الثانی فیما لایجوز بہ التوضؤ میں ہے :إذا أدخل الصبی یدہ فی کوز ماء أو رجلہ فإن علم أن یدہ طاہرۃ بیقین یجوز التوضؤ بہ وإن کان لا یعلم أنہا طاہرۃ أو نجسۃ فالمستحب أن یتوضأ بغیرہ ومع ہذا لو توضأ أجزأہ .کذا فی المحیط . آپ کے دوسرے سوال کا جواب یہ ہے کہ ،،صادق،، بہت اچھا نام ہے، جو حضرت نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے اسماء مبارکہ سے ہے۔ اس کے معنی ،،سچ کہنے والے،، کے ہیں۔ واللہ اعلم بالصواب ۔ سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ ، بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔ www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن۔

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com