***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > تلاش کریں

Share |
سرخی : f 497    صدقہ کے بکراکاحکم
مقام : پاکستان,
نام : محمد حسن
سوال:    

بکرا ذبح کرکے صدقہ کرنا کیسا ہے اور اس کے مسائل کیا ہیں؟


............................................................................
جواب:    

اگر بکرا صدقہ واجبہ کی نیت سے ذبح کیا گیا ہو جیسے بکرا صدقہ کرنے کی نذر مانی گئی تو اس کا حکم یہ ہے کہ اسے غیر سادات ضرورتمند افراد کو دیا جائے، صدقہ دینے والا اس سے خود نہ کھائے اور اہل و عیال کو نہ کھلائے-               اگر دیگر رشتہ دار ضرورتمند ہوں اور سادات نہ ہوں تو انہیں بھی کھلانا جائز ہے۔ اور اگر صدقہ نافلہ کی نیت سے ذبح کیا جائے تو مالدار افراد کو بھی شامل کیا جاسکتا ہے۔ رد المحتار کتاب الوقف میں ہے : لان الصدقۃ الواجبۃ لابدان تکون للہ تعالی علی الخلوص وصرفھا الی من لاتجوز شھادتہ لہ فیہ نفع لہ فلم تخلص للہ تعالی ۔(ردالمحتار،کتاب الوقف،مطلب لووقف علی الاغنیاء وحدھم لم یجز) واللہ اعلم بالصواب – سیدضیاءالدین عفی عنہ ، شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ بانی وصدر ابو الحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر ۔www.ziaislamic.com حیدرآباد دکن

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com