***** دیگر فتاوی مطالعہ کرنے کے لئے داہنی جانب والی فہرست پر کلک کریں *****



مضامین کی فہرست

فتاویٰ > معاشرت > نکاح کا بیان > لڑکے کی پرورش کے مسائل

Share |
سرخی : f 722    کیا ایک بہن اپنی بہن کو اولاد دے سکتی ہے ؟
مقام : فلک نما‘ حیدرآباد,
نام : ساجدہ
سوال:    

السلام علیکم مفتی صاحب! میرا ایک سوال ہے کہ کیا ایک بہن اپنی بہن کو اولاد دے سکتی ہے؟


............................................................................
جواب:    

جواب: وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ و برکاتہ! والدین اپنی اولاد دوسروں کو جہاں ان کی دیکھ بھال اور صحیح پرورش ہوسکتی ہے دے سکتے ہیں‘ لیکن اس لڑکے یا لڑکی کانسب اس کے حقیقی والدین سے ہی متعلق رہے گا‘ اب جو لڑکی یا لڑکے کی پرورش کریں گے وہ اس کے ماں باپ نہیں قرار پاتے‘ مربی ہوتے ہیں اسی طرح لڑکا یا لڑکی ان کی حقیقی اولاد نہیں ہوتی بلکہ متبنٰی‘پروردہ اور منہ بولابیٹا یا بیٹی کہہ سکتے ہیں‘ اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے وَمَا جَعَلَ أَدْعِیَائَکُمْ أَبْنَائَکُمْ۔

ترجمہ: اور اللہ تعالیٰ نے تمہارے منہ بولے بیٹوں کوتمہارے فرزند نہیں بنایا۔ (سورۃ الاحزاب۔ 4)

چنانچہ ایک بہن دوسری بہن کو اولاد دے سکتی ہے لیکن ان کا نسب انکے حقیقی ماں باپ کی طرف منسو ب ہوگا۔

واللہ اعلم بالصواب

 مفتی سید ضیاء الدین عفی عنہ  شیخ الفقہ جامعہ نظامیہ وبانی ابوالحسنات اسلامک ریسرچ سنٹر

www.ziaislamic.com حیدرآباد ، دکن ،انڈیا 15-09-2010

All Right Reserved 2009 - ziaislamic.com