Hindi English
 
 
 

Share |
: مضمون
درود پڑھنے والے پر اللہ کی رحمتیں

درود پڑھنے والے پر اللہ کی رحمتیں

پس معلوم ہوا کہ جیسے درود شریف گزرانے جانے کی دو ذریعے ہیں اسی طرح سلام عرض ہونے کے بھی دو ذریعہ ہیں ۔ ایک جبرئیل علیہ السلام دوسرے یہ ملائک۔ مناسب اس مقام کے اور بہت سی حدیثیں صیحح و ضعیف وغیرہ ہیں۔

منجملہ ان کے دو تین حدیثیں یہاں بیان کی جاتی ہیں ۔ ہر چند بعض محدثین نے ان میں کلام کیا ہے مگر ہم یہاں اتباع ان محدثین کا کرتے ہیں جنہوں نے ان کو روایت کیا ہے۔

قسطلانی رحمة اللہ علیہ نے مسالک الحنفا میں اس حدیث کو نقل کیا عن انس بن مالک عن النبی صلی اللہ علیہ وسلم قال من صلی علی صلوٰۃ تعظیما لحقی جعل اللہ من تلک الکلمۃ ملکا جناح لہ فی المشرق و جناح لہ فی المغرب و رجلاہ فی تخوم الارض وعنقہ ملتویۃ تحت العرش یقول اللہ تعالٰی لہ صل علی عبدی کما صلی علی نبیی فھو یصلی علیہ الی یوم القیٰمہ رواہ ابن شاھین فی الترغیب والدیلمی فی مسند الفردوس و ابن بشکوال و ھذا حدیث منکر۔

ترجمہ: فرمایا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کہ جو شخص مجھ پر ایک درود پڑھے میر ے حق کی تعظیم کے واسطے تو حق تعالیٰ اس کلمہ سے ایک فرشتہ ایسا پیدا کرتا ہے کہ ایک بازو اس کا مشرق میں ہوتا ہے اور ایک مغرب میں اور پاوٴں زمین کے نیچے اور عرش کے نیچے اس کی گردن جھکی ہوتی ہے۔

اللہ تعالیٰ اس کو فرماتا ہے تو درود پڑھ اس میرے بندہ پر جیسا کہ اس نے میرے نبی صلی اللہ علیہ وسلم پر درود پڑھا تو وہ قیامت تک اس پر درود پڑھتا رہے گا ۔ روایت کیا اس کو ابن شاہین نے اپنی کتاب ترغیب میں اور دیلمی نے فردوس میں اور ابن بشکوال نے ۔

اور یہ روایت بھی مسالک الحنفا میں ہے:وعن معاذ بن جبل رضی اللہ عنہ قال قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ان اللہ اعطانی مالم یعط احداً من الانبیاء وفضلنی علیھم وجعل لامتی فی الصلوٰۃ علی افضل الدرجات و کل بقبری ملکا یقال لہ منطوش راسہ تحت العرش و رجلاہ فی تخوم الارض السفلی ولہ ثمانون الف جناح فی کل جناح ثمانون الف ریشة کل ریشتہ ثمانون الف رغبۃ تحت کل زغبۃ لسان یسبح اللہ تعالیٰ و یحمدہ ویستغفر لمن یصلی علی من امتی ومن لدن راسہ الی بطون قدمیہ افواہ ولسن و ریش وزغب لیس فیہ موضع شبرالا و فیہ لسان یسبح اللہ تعالیٰ و یحمدہ و یستغفر لمن یصلی علی من امتی حتی یموت رواہ ابن بشکوال وھو غریب منکر بل لوائح الوضع لائحۃ علیہ ۔

ترجمہ: فرمایا ر سول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے کہ حق تعالیٰ نے مجھے وہ رتبے دئیے ہیں جو کسی نبی کو نہ ملے اور مجھ کو سب نبیوں پر فضیلت دی اور اعلیٰ درجے مقرر کئے ، میری امت کیلئے مجھ پر درود پڑھنے میں اور متعین فرمایا میری قبر کے پاس ایک فرشتہ جس کا نام منطوش ہے۔ اس کا سرعرش کے نیچے اور پاوٴں منتہائے زمین اسفل ہیں۔ اور اس کے 80 ہزار بازو ہیں اور ہر بازو میں 80 ہزار پر اور نیچے ہر پر کے 80 ہزار رونگٹے اور ہر رونگٹے کے نیچے ایک زبان ہے جس سے تبسیح و تحمید اللہ تعالیٰ کی کیا کرتا ہے اور اس شخص کیلئے دعائے مغفرت کیا کرتا ہے جو میرا امتی مجھ پر درود پڑھے ، اس کے سر سے قدم کے نیچے تک تمام منہ اور زبانیں اور پر اور رونگٹے ہیں۔ کہیں بالشت بھر جگہ اس میں ایسی نہیں کہ جس میں زبان نہ ہو ، اس کا کام یہ ہے کہ تسبیح اور تحمید اللہ تعالیٰ کی اور طلب مغفرت ان لوگوں کے حق میں کیا کرے جو مجھ پر درود پڑھا کرتے ہیں مرنے تک۔ روایت کیا اس کو بشکوال نے انتہیٰ۔

اور وسیلۃ العظمیٰ میں مروی ہے:من عطس فقال الحمد للہ علی کل حال ماکان من حال و صلی اللہ علی محمد و علی اھل بیتہ اخرج اللہ من منخرہ الایسر طیراً اکبر من الذباب و اصغر من الجراد یرفرف تحت العرش یقول اللھم اغفرلقائلھا رواہ ابن بشکوال عن ابن عباس رضی اللہ عنھما۔

ترجمہ روایت ہے ابن عباس رضی اللہ عنہماسے کہ جو شخص چھینک کر کہے الحمد للہ الخ نکالتا ہے حق تعالیٰ اس کی ناک سے بائیں نتہنے سے ایک پر، نہ مکھی سے بڑا اور ٹڈے سے چھوٹا ، جو عرش کے نیچے پر ہلاتا ہوا یہ کہتا ہے ؛(اللھم اغفر لقائلھا) یعنی یا اللہ بخش دے اس حمد و صلوٰۃ کے کہنے والے کو ۔ روایت کیا اس کو ابن بشکوال نے انتہیٰ۔

امام سخاوی نے قول بدیع میں لکھا ہے کہ سند اس حدیث کی ٹھیک ہے مگر اس میں یزید بن ابی زیاد ہیں کہ اکثروں نے ان کو ضعیف کہا ہے لیکن مسلم نے ان کی حدیث کو بطور متابعت ذکر کیا ہے، انتہیٰ۔

از: انوار احمدی ، مولفہ حضرت شیخ الاسلام امام محمد انوار اللہ فاروقی ، بانی جامعہ نظامیہ رحمۃ اللہ علیہ

submit

  SI: 57   
حضور صلی اللہ علیہ وسلم ہمارے درود وسلام سنتے ہیں  

  SI: 65   
حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو دیکھنے والا شقاوت سے نکل جاتاہے  

  SI: 41   
اذان کی برکت  

  SI: 47   
آشوب چشم کا فوراً دفع ہونا  

  SI: 68   
قرآن و حدیث سے مسائل کا استنباط کرنا ہرکسی کا کام نہیں  

  SI: 56   
تمام انبیاء و ملائک پر خصوصیت و عظمت آشکار  

  SI: 67   
سرکاردوعالم کی توجہ وعنایت آن واحد میں سب کی طرف  

  SI: 13   
میلاد النبی صلی اللہ علیہ واٰلہ وسلم کی شرعی حیثیت ۔ قسط اول  

  SI: 60   
درود پڑھنے والے پر اللہ کی رحمتیں  

  SI: 64   
عینِ عبادت نماز میں حکمِ صلوۃ وسلام  

Copyright 2008 - Ziaislamic.com All Rights reserved